مسلح افراد کا خواتین پربدترین تشدد، راستے بھی بند 

مسلح افراد کا خواتین پربدترین تشدد، راستے بھی بند 

  

 شاہ جمال(نمائندہ پاکستان)پسند کی شادی کے شاخسانہ پر لسکانی برادری کے ڈنڈوں لاٹھیوں سے مسلح افراد نے احساس پروگرام کی امدادی رقم وصول کرنے جانے والے(بقیہ نمبر36صفحہ6پر)

 بلہوڑا برادری کے تین خاندانوں پر حملہ کردیا۔ غریب افراد پر بدترین تشددکیاگیا۔بستی بلہوڑا کے سینکڑوں رہائشیوں کی آمدورفت کاراستہ زبردستی بند کردیاگیا۔موضع بیٹ مندو تھانہ شاہ جمال کے رہائشی فدا حسین ولد کریم بخش بلہوڑا نے تحریری طور پر بتایا کہ انکے دور پار کے ہم قوم نوجوان نے لسکانی برادری کی لڑکی سے پسند کی شادی کی۔جس پر لسکانی برادری پوری بلہوڑا برادری کی دشمن بن گئی۔گزشتہ روز بلہوڑا قوم کے غریب افراد غلام حسین، نور محمد اور فداحسین اپنی خواتین کے ہمراہ احساس پروگرام کی امدادی رقم وصول کرنے سنٹر جا رہے تھے۔پہلے سے باہم صلاح و مشورہ موجود لسکانی قوم کے با اثر افراد سراج احمد، اللہ ڈیوایا اور غلام حسین لسکانی وغیرہ نیڈنڈوں اور لاٹھیوں سے حملہ کرکے بدترین تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔ون فائیو پر شاہ جمال پولیس کو اطلاع دی گئی۔مضروبان کو شدید زخمی حالت میں رورل ہیلتھ سنٹر شاہ جمال پہنچا دیا گیا۔تاحال ملزمان کے خلاف مقدمہ درج نہیں ہوا بلہوڑا برادری کی خواتین نے احتجاج کرتے ہوئے بتایا کہ قانونی کارروائی سے بے نیاز ملزمان نے بستی بلہوڑا کے سیکڑوں مکینوں کی آمدورفت کا راستہ بند کرکے راستے پر آتشیں اسلحہ سے لیس افراد متعین کردییہیں۔ پوری بستی کے لوگ عملا گھروں میں  محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔بچوں اور بچیوں کا سکول جانا بند ہو گیا ہے جس کی وجہ سے وہ خود زدہ ہیں انہوں نے ڈی پی او ضلع مظفرگڑھ سے استدعا کی کہ تھانہ شاہ جمال کو با اثر افراد کے خلاف اندراج مقدمہ کا حکم جاری کیا جائے۔بستی بلہوڑا کی آمدورفت کے زبردستی بند کیے گئے راستے کو بحال کرایا جائے رابطہ کرنے پر ایس ایچ او تھا نہ شاہ جمال فرحت عباس  نے واقعہ کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ لڑائی ہوئی ہے مضروبین کو ڈاکٹ جاری کر دئیے گئے ہیں میڈیکل رپورٹس آنے پر مقدمہ درج کیا جائیگا۔

تشدد

مزید :

ملتان صفحہ آخر -