ٹرائل کی عمارت کو ایسے کھڑا نہ کریں کہ وہ تاش کے پتوں کی طرح بکھر جائے،اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیئرمین پی ٹی آئی کی جیل ٹرائل کیخلاف درخواست پر ریمارکس

ٹرائل کی عمارت کو ایسے کھڑا نہ کریں کہ وہ تاش کے پتوں کی طرح بکھر جائے،اسلام ...
ٹرائل کی عمارت کو ایسے کھڑا نہ کریں کہ وہ تاش کے پتوں کی طرح بکھر جائے،اسلام آباد ہائیکورٹ کے چیئرمین پی ٹی آئی کی جیل ٹرائل کیخلاف درخواست پر ریمارکس

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)سائفر کیس میں جیل ٹرائل کیخلاف چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست پر جسٹس گل حسن اورنگزیب نے ریمارکس دیتے ہوئے کہاکہ غیرمناسب انداز میں ٹرائل آگے نہ بڑھایا جائے، ٹرائل کی عمارت کو ایسے کھڑا نہ کریں کہ وہ تاش کے پتوں کی طرح بکھر جائے۔

نجی ٹی وی چینل جیو نیوز کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ میں  سائفر کیس میں جیل ٹرائل کیخلاف چیئرمین پی ٹی آئی کی درخواست پر سماعت ہوئی، اسلام آباد ہائیکورٹ کے ڈویژن بنچ نے کیس کی سماعت کی،جسٹس گل حسن اورنگزیب نے استفسار کیا کہ اٹارنی جنرل صاحب آپ آج ہی دلائل دینا چاہتے ہیں؟اٹارنی جنرل منصور عثمان اعوان نے کہاکہ مجھے کچھ وقت دیا جائے آئندہ سماعت پر دلائل دوں گا، جسٹس میاں گل حسن اورنگزیب نے کہاکہ یہ عدالت چاہتی ہے کہ اس کیس کا فیصلہ جلد کردیا جائے،وکیل  چیئرمین پی ٹی آئی سلمان اکرم راجہ نے کہاکہ عدالت جیل ٹرائل پر حکم امتناع جاری کرے،جسٹس گل حسن اورنگزیب نے کہاکہ اٹارنی جنرل کو سن لیں، ابھی حکم امتناع جاری نہیں کریں گے،اٹارنی جنرل نے عدالت کی آبزرویشنز اور آپ کے تحفظات بھی سن لئے ہیں،اٹارنی جنرل یقینی بنائیں کہ غیرمناسب طریقے سے ٹرائل آگے نہ بڑھایا جائے۔

اسلام آباد ہائیکورٹ کے ڈویژن بنچ نے اٹارنی جنرل سے مکالمہ کیا،جسٹس گل حسن نے کہا کہ اٹارنی جنرل صاحب، غیرمناسب انداز میں ٹرائل آگے نہ بڑھایا جائے،اٹارنی جنرل منصور عثمان اعوان نے کہاکہ میں یقینی بناؤں گا کہ ملزم کے حقوق متاثر نہ ہوں، جسٹس گل حسن نے کہاکہ انصاف نہ صرف ہونا چاہئے بلکہ ہوتا ہوا دکھائی بھی دینا چاہئے۔

پراسیکیوٹر نے کہا کہ ٹرائل سے پہلے چیئرمین پی ٹی آئی کو وکلا سے مشاورت کا وقت دیا جاتا ہے،عدالت نے کہاکہ ٹرائل کی عمارت کو ایسے کھڑا نہ کریں کہ وہ تاش کے پتوں کی طرح بکھر جائے، کیس کی مزید سماعت آئندہ منگل 14نومبر تک ملتوی کردی گئی ۔