پی آئی اے نے اے اے سی ایل کے ساتھ 26ملین ڈالر کا تنازعہ ماورائے عدالت حل کر لیا

پی آئی اے نے اے اے سی ایل کے ساتھ 26ملین ڈالر کا تنازعہ ماورائے عدالت حل کر لیا
پی آئی اے نے اے اے سی ایل کے ساتھ 26ملین ڈالر کا تنازعہ ماورائے عدالت حل کر لیا
سورس: File Photo

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)قومی فضائی کمپنی ’پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائنز‘ (پی آئی اے) نے ایشیاءایوی ایشن کیپیٹل لمیٹڈ (اے اے سی ایل)کے ساتھ ہوائی جہازوں کے حصول سے متعلق 26ملین ڈالر (تقریباً 7ارب 45کروڑ روپے)کا تنازعہ ماورائے عدالت حل کر لیا۔ 
ڈیلی پاکستان گلوبل کے مطابق گزشتہ ماہ کابینہ کی اقتصادی رابطہ کمیٹی (ای سی سی) کی طرف سے ان 2طیاروں کی خریداری اور وطن واپسی کے لیے مذکورہ رقم کی منظوری بھی دی گئی تھی۔ یہ دونوں ایئربس اے 320طیارے ستمبر 2021ءمیں جکارتہ میں گراﺅنڈ کر دیئے گئے تھے۔
رپورٹ کے مطابق 2015ءمیں پاکستان نے ان طیاروں کے لیے 6سالہ لیز کا معاہدہ کیا تھا۔ لیز کی ماہانہ ادائیگی ساڑھے 5لاکھ ڈالر کے لگ بھگ تھی، جس میں ہوائی جہاز کا کرایہ، دیکھ بھال اور انشورنس وغیرہ سمیت تمام اخراجات شامل تھے۔ لیز کا یہ معاہدہ 2021ءمیں مکمل ہوا، جس کے بعد جہازوں کو دوبارہ ترسیل کے لیے جکارتہ روانہ کر دیا گیا۔ اسی دوران ایئرایشیاءنے اس لیزنگ کمپنی پر قبضہ کر لیا، جس سے پاکستان نے یہ طیارے لیز پر حاصل کیے تھے۔
نئی انتظامیہ نے شرط عائد کر دی کہ لیز پر لیے گئے طیاروں کو ان کی اصل حالت میں واپس کیا جائے، جس کے لیے ضروری تھا کہ جہازوں کے پرانے پرزوں کی جگہ نئے لگائے جائیں۔کمپنی نے طیاروں کی دیکھ بھال اور مرمت کے لےی انہیں ایل ایف ٹیکنکس کے حوالے کرنے پر اصرار کیا اور پاکستان نے کمپنی کا یہ مطالبہ مان لیا۔
اس کے بعد پی آئی اے اور ایئرایشیاءکے مابین کئی بار مذاکرات ہوئے اور طیاروں کے پرزے تبدیل کرکے انہیں نئی حالت میں بحال کر دیا گیا۔ بعد ازاں حکومت نے ان طیاروں کو خریدنے کا فیصلہ کر لیا اور ایئرایشیاءبھی اس پر رضامند ہو گئی تاہم پاکستان فوری طور پر ضروری فنڈز کا بندوبست کرنے میں ناکام رہاجس پر کمپنی نے طیارے فروخت کرنے کا معاہدہ ختم کر دیا۔ اب ایک بار پھر مذاکرات ہوئے اور طیاروں کی قیمت 21سے 26ملین ڈالر تک طے ہوئی۔ ذرائع کے مطابق رقم کی ادائیگی کے بعد پہلا طیارہ دو ہفتے کے اندر پاکستان پہنچ جائے گا جبکہ دوسرا طیارہ اگلے مہینے بھیجا جائے گا۔