ےو کے پی این پی نے کشمیری قومیتوں کے حقوق کو تسلیم کیا ہے‘نائیلہ خانین

ےو کے پی این پی نے کشمیری قومیتوں کے حقوق کو تسلیم کیا ہے‘نائیلہ خانین

لندن (این این آئی)متحدہ کشمیر پیپلز نیشنل پارٹی کی مرکزی سنیئر وائس چیئر پرسن نائیلہ خانین نے کہا ہے کہ پی این پی نے قوم پرست سیاست کو درست سمت دی ہے۔ مشکل ترین حالات میں بھی پارٹی نے قائدانہ کردار انتہائی خوبی سے نبھایا ہے جس طرح کارل مارکس نے ہیگل کے فلسفہ کو سر کے بل سے سیدھا کر کے ٹانگوں پر کھڑا کیا تھا۔ یو کے پی این پی ہی وہ سیاسی جماعت ہے جس نے کشمیری قوم کو اپنے آقا کی نشاندہی کرائی اور اس کلچر کو مکمل ختم کیا کہ ڈپٹی کمشنروں کی قیادت میں بھارتی مقبوضہ کشمیر میں کسی واقعہ کے خلاف نعرے بازی کو تحریک آزادی نہ سمجھا جائے۔ ےہ ہمارے سچے نظرےات کی فتح ہے کہ آٹھ مقام سے لے کر ہجیرہ اور بھمبر سے لیکر منگ اور تراڑکھل کا تاریخی کنونشن اورپروگرامات عالمی توجہ کی مرکز بنے ۔

 ان خےالات کا اظہار انہوںنے ےو کے پی این پی ےورپ زون کے صدر امجد ےوسف برطانیہ زون کے عہدیداران عثمان کےانی سے ملاقات اور شمالی امریکہ کے آرگنائزر سردار طاہر رفیق سے ٹیلی فون پر گفتگو کرتے ہوئے کےا ، نائیلہ خانین نے کہا کہ ےو کے پی این پی نے کشمیری قومیتوں کے حقوق کو تسلیم کیا ہے اور ان کی شناخت کا احترام کیا اور ان کی آزادانہ مرضی اور منشاءسے ریاست جموں و کشمیر کے ساتھ رہنے اور مسئلہ کشمیر کا فریق بننے کے عمل کو اکیڈمک بحث کا موضوع بنایا۔ انہوں نے کہا پی این پی نے ریاست میں جاری فرقہ پرستی اور دہشت گردی کی تحریک پر وہ کاری حملہ کیا کہ ان کو بھاگنے کے علاوہ کوئی اور راستہ نہیں ملا۔ اس سلسلہ میں آٹھ مقام سے لے کر ہجیرہ اور بھمبر سے لیکر تراڑکھل تک ہمارے پروگرامات عالمی توجہ کی مرکز بنے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پی این پی نے خوف اور دہشت کی فضاﺅں ، حکمرانوں کے الزامات اور حملوں میں، نام نہاد وطن دوستوں کے حسد اور بغض میں، سرمایہ داروں اور اعلیٰ طبقات کی نفرتوں میں اپنے اس پرچم کو اس خطے میں بلند رکھا۔ ہم کامیاب ہوئے یا کمزوریاں غالب آگئیں لیکن ہمارا سفر جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم یہ دعویٰ نہیں کرتے کہ ہم نے منزل حاصل کر لی لیکن ہم نے درست راستے پر چلنا ضرور شروع کیا ہے۔ سفر جاری ہے۔ منزل سامنے ہے۔ بس چند سدراہ اور ہیں اور پھر منزل پر پہنچنا ہی ہمارا مقدر ہے۔ نائیلہ خانین نے اس حقیقت کا اعتراف کہ یہ سب کچھ صرف اور صرف اس صورت میں ممکن ہوا کہ ہمیں سردار شوکت علی کشمیری کی ولولہ انگیز، جرا¿ت مند، اعلیٰ ظرف، عفو درگزر کے اوصاف سے بھرپور اور اعلیٰ شعوری اوصاف کی حامل قیادت ملی ہے۔ انہوں نے پارٹی کی آرگنائزنگ میں آزادکشمیر اور دنےا بھر کے تمام کارکنوں، عہدیداروں اور اشخاص کو سلام پیش کےا جو ایک قدم بھی ہمارے ساتھ چلے، یا ایک جملہ خیر بھی ہمارے حق میں کہا۔

مزید : عالمی منظر