پاکستان کیلئے جنوبی افریقہ کیخلاف ٹیسٹ سیریز جیتنا بڑا چیلنج

پاکستان کیلئے جنوبی افریقہ کیخلاف ٹیسٹ سیریز جیتنا بڑا چیلنج

پاکستان اور جنوبی افریقہ کی کرکٹ ٹیموں کے درمیان ٹیسٹ سیریز کےلئے پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کھلاڑیوں کا اعلان کردیا گیا ہے اور توقع کے مطابق ون ڈے اور ٹی ٹونٹی کرکٹ ٹیم کے کپتان محمد حفیظ کو ان کی ناقص کارکردگی کی وجہ سے ٹیم میں جگہ نہیں دی گئی ہے کسی کے لئے بھی یہ فیصلہ حیران کن نہیں ہے اس کی سب سے بڑی وجہ ہے کہ انہوں نے زمبابو ے کے خلاف کھیلی جانے والی ٹیسٹ سیریز میں ناقص کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا جبکہ ان سے ناقص کارکردگی کی توقع نہیں کی جارہی تھی ٹیسٹ ٹیم کےلئے نوجوان کھلاڑی کو موقع دیا گیا پاکستان اور افریقہ کے خلاف ٹیسٹ سیریز آسان نہیں ہوگی اور پاکستانی کرکٹ ٹیم کو جنوبی افریقہ کے خلاف کامیابی حاصل کرنے کےلئے سخت محنت کی ضرورت ہے پاکستان کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کے بارے میں بھی قیاس آرائیاں کی جارہی تھیں کہ ان کو بھی شائد ناقص کارکردگی کی بناءپر کپتانی سے ہاتھ دھونا پڑیگا لیکن ایسا نہیں ہوا بلکہ ان کو شائد ایک موقع اور دیا گیا ہے یا پھر یہ کہہ لیا جائے تو زیادہ درست ہوگا کہ اس وقت ان کی جگہ کپتانی کرنے کے لئے کوئی اور کھلاڑی موجود نہیں ہے اس لئے ان کو کپتانی سے نہیں ہٹایا گیاورنہ شائد ان کو بھی کپتانی سے ہٹادیا جاتا پاکستان کرکٹ ٹیم ان دنوں افریقہ کے خلاف سیریز کےلئے جاری تربیتی کیمپ میں تربیت میںمصروف ہے یہ سچ ہے کہ پاکستان کےلئے یہ سیریز کسی بڑے معرکہ سے کم نہیں ہے اور پاکستان کو کامیابی کے لئے سخت محنت کی ضرورت ہے اس سے قبل اگر دونوں ٹیموں کے درمیان اب تک کھیلی جانے والی ٹیسٹ سیریز بارے بات کی جائے تو افریقہ کی ٹیم نے پاکستان کو ٹف ٹائم دیا ہے لیکن پاکستا ن نے بھی بھرپور جواب دیا ہے پاکستان کرکٹ ٹیم کے کوچ واٹمور کے لئے بھی جنوبی افریقہ کے خلاف یہ سیریز بہت اہمیت کی حامل ہے اور اب تک وہ پاکستان کو کوئی ٹیسٹ سیریز نہیں جتواسکے ہیں اور امید ہے کہ اس مرتبہ وہ ضرور سرخرو ہوجائیں گے ان کے لئے بھی یہ سیریز اس لحاظ سے بھی بہت اہمیت کی حامل ہے کہ اس سیریز کے بعد ان کا پاکستان کرکٹ ٹیم کے کوچ کی حیثیت سے معاہدہ اختتام پزیر ہورہا ہے اور ان کی دوبارہ تقرری اس سیریز سے منسلک ہے جنوبی افریقہ کی کرکٹ ٹیم یو اے ای کی سر زمین پر پہنچ گئی ہے اور پاکستان اے کرکٹ ٹیم کے خلاف میچ سے اپنے دورے کا آغاز کرے گی یو اے ای میں افریقہ کی نسبت پاکستان کی کرکٹ ٹیم کو کھیلنے میں زیادہ آسانی ہوگی اور وکٹیں بھی پاکستان کو زیادہ سپورٹ کریں گی جس کا پاکستان کو فائدہ اٹھانے کی ضرورت ہے ۔

مزید : کھیل اور کھلاڑی