میانمار میں مسلم کش فسادات پھر شروع ،مذہبی عمارات نذرآتش، مسلمان ہی گرفتار

میانمار میں مسلم کش فسادات پھر شروع ،مذہبی عمارات نذرآتش، مسلمان ہی گرفتار
میانمار میں مسلم کش فسادات پھر شروع ،مذہبی عمارات نذرآتش، مسلمان ہی گرفتار

  

ینگون (مانیٹرنگ ڈیسک) مغربی میانمار میں مسلم کش فساداکے دوران3 مذہبی عمارتیں نذر آتش کردی گئیں جبکہ 482 افراد بے گھر ہو گئے، مسلم کش فسادات کےبعد درجنوں مسلم افراد کو گرفتار کر لیا ۔ تازہ فسادات صدر کے پرتشدد علاقے کا دورہ کرنے کے دوران شروع ہوئے جہاں رفائن ریاست کے گاﺅں میں تھنڈوے گاﺅں میں ایک راہب نے سینکڑوں افراد کے ساتھ مقامی مسلمانوں کے گھروں پر حملہ کیا۔ صدر تھین سین کا گزشتہ سال سے رفائن ریاست میں شروع ہونے والے فسادات کے بعد یہ پہلا دورہ تھا جہاں انہوں نے تھنڈوے گاﺅں میں رات گزاری جس کے باوجود وہاں پر تشدد کے واقعات جاری رہے ۔ پولیس نے حالیہ فسادات کے سلسلے میں 2 خواتین سمیت 44 افراد کو گرفتار کر لیا جن میں اکثریت مسلمانوں کی ہے ۔

مزید : انسانی حقوق /اہم خبریں