کیا چین بھی شام پہنچنے والا ہے؟ عربی ماہر نے دعویٰ کر دیا

کیا چین بھی شام پہنچنے والا ہے؟ عربی ماہر نے دعویٰ کر دیا
کیا چین بھی شام پہنچنے والا ہے؟ عربی ماہر نے دعویٰ کر دیا

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) شام میں روس کی مداخلت سے ہی امریکا اور اس کے حلیف مغربی ممالک خاصے گھبرائے ہوئے تھے کہ اب تجزیہ کاروں نے یہ خیال ظاہر کردیا ہے کہ چین بھی شام کے میدان میں سرگرم نظر آسکتا ہے۔

نامعلوم کالرز کی معلومات دینے والی حیران کن ایپ اردومیں بھی دستیاب

آن لائن جریدے ’العربیہ‘ میں شائع ہونے والے ایک مضمون میں تجزیہ کار ڈاکٹر تھیوڈوکراسک لکھتے ہیں کہ چین اور روس کے درمیان متعدد عالمی امور پر اتفاق رائے پایا جاتا ہے اور خصوصاً اقوام متحدہ میں چین کے حالیہ بیان کا مطلب یہ بھی لیا جاسکتا ہے کہ چین شام میں ”من پسند مداخلت“ پر خاموش تماشائی کا کردار ادا نہیں کرے گا۔ ان کے نزدیک یہ نکتہ بھی اہم ہے کہ شامی تنازعے میں چین نے ہمیشہ روس کے موقف کی حمایت کی ہے۔

تھائی لینڈ میں عجیب و غریب بھیانک جانور دریافت، شکل بھینس اور مگرمچھ جیسی

ڈاکٹر تھیوڈور کے مطابق یہ افواہیں بھی پائی جاتی ہیں کہ بحیرہ روم میں چینی بحریہ کے جنگی جہازوں کی موجودگی بھی روس اور شامی صدر بشارالاسد کی حمایت میں مددگار ثابت ہوسکتی ہے۔ یہ بھی بتایا گیا ہے کہ شامی بندرگاہ لتاکیہ میں بھی ایک چینی بحری جہاز کھڑا ہے، تاہم مبصرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ اس کا مقصد بوقت ضرورت شام میں موجود چینی سفارتکاروں اور شہریوں کی مدد کرنا ہو سکتا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -