بار ایسوسی ایشن نظربندوں کی رہائی کیلئے عدالتی کارروائی میں سرعت لائے، حریت کانفرنس

بار ایسوسی ایشن نظربندوں کی رہائی کیلئے عدالتی کارروائی میں سرعت لائے، حریت ...

سرینگر(این این آئی)مقبوضہ کشمیرمیں کل جماعتی حریت کانفرنس نے حریت قائدین اور بڑی تعداد میں کشمیری نوجوانوں کی گرفتاری پرشدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے ذمہ داروں سے اپیل کی ہے کہ وہ گرفتار شدگان خاص طورپر حریت قائدین کی فوری رہائی کیلئے عدالتی کارروائی میں سرعت لائیں۔ کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق حریت کانفرنس کے ترجمان نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں بارایسوسی ایشن سے اپیل کی کہ وہ جیلوں اور پولیس اسٹیشنوں میں غیر قانونی طورپر نظربند حریت رہنماؤں میرواعظ عمر فاروق، محمد یاسین ملک، شبیر احمد شاہ، نور محمد کلوال، آسیہ اندرابی، ایاز اکبر، الطاف احمد شاہ اور دیگر کی رہائی کے لیے عدالتی کارروائی میں سرعت لائیں۔ انہوں نے واضح کیاکہ حریت قیادت پر قدغن اور پابندیوں سے ان کے جذبہ حریت کوکمزور نہیں کیا جاسکتا ۔ انہوں نے دختران ملت کی سربراہ آسیہ اندرابی کی گرفتاری کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاکہ ایک علیل خاتون کو نظربند کرنا نام نہاد بھارتی جمہوریت کی ایک شرمناک کارروائی ہے ۔

انہوں نے کہاکہ آزادی کی تحریک صرف چند لوگوں کی آواز نہیں بلکہ کشمیری عوام کی مشترکہ آواز ہے جسے طاقت کے بل پر خاموش نہیں کرایا جاسکتا ۔ حریت کانفرنس نے اسپتالوں میں رضاکارانہ طورپر کام کرنے والے اداروں کو پولیس اور انتظامیہ کی طرف سے اپنے کیمپ بند کرنے کے احکامات کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ خدمت خلق کے جذبے سے سرشار لوگوں کے جذبہ ایثار وقربانی کو سراہنے کے بجائے ان کا کافیہ تنگ کرنے اور ستانے کی بزدلانہ کارروائی ، یزیدیت اور غنڈہ گردی سے ہی تعبیر کیا جاسکتا ہے۔ترجمان نے انتظامیہ کی طرف سے سرکاری ملازمین کو دفاتر میں حاضری یقینی بنانے کے احکامات کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہاکہ اس اقدام سے انتظامیہ نے اپنی شکست کا اعتراف کر لیا ہے۔

مزید : عالمی منظر