سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی کی یوایم ٹی آمد،ڈاکٹرحسن صہیب مرادسے ملاقات

سابق وزیراعظم یوسف رضاگیلانی کی یوایم ٹی آمد،ڈاکٹرحسن صہیب مرادسے ملاقات

لاہور ( پ ر) سابق وزیراعظم پاکستان سیدیوسف رضاگیلانی نے کہا ہے کہ جب تک کابل میں امن نہیں ہوتا اوروہ مضبوط نہیں ہوتا اورجب تک کشمیرمیں آزادی کی صبح طلوع نہیں ہوتی دنیا میں امن قائم نہیں ہوسکتا۔ ان خیالات کااظہارانہوں نے گزشتہ روز یونیورسٹی آف مینجمنٹ اینڈٹیکنالوجی (یوایم ٹی) میں ریکٹرڈاکٹرحسن صہیب مرادسے ملاقات اوربعدازاں موجودہ ملکی وبین الاقوامی حالات پرایک سیمینارسے خطاب کرتے ہوئے کیا۔سابق وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان پہلے سے زیادہ مضبوط ہے اورافواج پاکستان دنیاکی بہترین افواج میں سے ہیں جوکہ تمام بیرونی خطرات سے نمٹنے کی پوری صلاحیت رکھتی ہیں اس لیے بھارت سمیت کوئی بھی جارحیت کانہ سوچے۔انہوں نے کہا کہ آج ملک میں لولی لنگڑی جس قسم کی بھی جمہوریت دیکھنے کومل رہی ہے یہ شہید محترمہ بے نظیربھٹوکی سیاسی بصیرت اورچارٹرآف ڈیموکریسی کومتعارف کروانے کی وجہ سے ہے۔انہوں نے کہا کہ ملکی ترقی کادارومدارپارلیمنٹ کی مضبوطی وخودمختاری پرہے پارلیمینٹ مضبوط ہوگی توادارے مضبوط ہونگے ۔

انہوں نے کہا کہ نیشنل ایکشن پلان پرسختی کے ساتھ عمل ہوناچاہیے کراچی سمیت ملک بھرمیں جوکچھ امن نظرآرہاہے وہ اسی وجہ سے ہے۔انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کی جنگ میں قوم نے نے ناقابل تلافی نقصان اٹھایاہے اوراداروں نے قربانیاں دی ہیں جوکہ امریکہ سمیت پوری دنیاکونظرآنی چاہییں۔یوسف رضاگیلانی نے کہا کہ امریکہ کاڈومورکامطالبہ ایک ناجائزمطالبہ ہیں ،ہم اس کی بہت عزت کرتے ہیں مگراس کے ساتھ تمام تعلقات برابری کی بنیادپرقائم رکھنا چاہتے ہیں۔امریکہ کومعلوم ہوناچاہیے کہ پاکستان نے دہشت گردی کی جنگ اس کاساتھ پارٹنربن کر لڑنے کے لیے آمادگی ظاہرکی تھی لیکن اب ہماری قربانیوں کونظراندازکیاجارہاہے۔پانامہ اکاؤنٹس کے حوالے سے تبصرہ کرتے ہوئے یوسف رضاگیلانی نے کہا کہ عمران خان سمیت سب کوپارلیمنٹ میں یہ مسئلہ حل کرواناچاہیے اورپیپلزپارٹی کے بل کی حمایت کرنی چاہیے۔

آخرمیں ریکٹریوایم ٹی ڈاکٹرحسن صہیب مرادنے سابق وزیراعظم کویادگاری شیلڈپیش کی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4