ریسکیو 1122 میں عہدوں کی جنگ رضوان نصیر کیخلاف دستخطی مہم شروع

ریسکیو 1122 میں عہدوں کی جنگ رضوان نصیر کیخلاف دستخطی مہم شروع

لا ہور (اپنے کرا ئم ر پو رٹر سے ) ریسکیو 1122 میں عہدوں کی جنگ چھڑ گئی، متوقع ڈی جی ڈاکٹر رضوان نصیر کیخلاف افسران واہلکاروں میں دستخطی مہم شروع ہوگئی۔تفصیلات کے مطابق ڈائریکٹر جنرل ریسکیو 1122 کی سیٹ کیلئے افسران میں عہدے کی جنگ عروج پر پہنچ چکی ہے۔ متوقع ڈی جی ڈاکٹر رضوان نصیر کیخلاف افسران واہلکاروں میں دستخطی مہم بھی شروع کردی گئی ہے۔دستخطی پیپر میں ڈاکٹر رضوان نصیر کو کام چور افسر لکھا گیا ہے جبکہ وزیر اعلیٰ پنجاب سے اْنہیں ڈی جی نہ لگانے کا کہا گیا ہے، دستخطی مہم کے ذریعے کسی ایماندار افسر کو ڈی جی لگانے کی بھی اپیل کی گئی ہے۔متن میں لکھا گیا ہے کہ رضوان نصیر دس سال قبل بھی ڈی جی تھے مگر انہوں نے فلاحی کام نہیں کئے۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ دیگراضلاع کے ایمرجنسی آفیسرز کو بھی دستخطی مہم کا متن بذریعہ ای میل بھجوا دیا گیاہے۔ریسکیو کے بیشتر اہلکار اور افسران سبکدوش ہونے والے ڈی جی کی مہم جوئی پر حیران ہوئے اور ایسے اقدامات کی حوصلہ شکنی بھی کی۔محکمہ داخلہ نے وزیر اعلیٰ پنجاب کو نئے ڈی جی کیلئے رضوان نصیر اور ارشد ضیا کے نام بھجوائے تھے جس پر تاحال کوئی فیصلہ نہیں ہوسکا۔

مزید : علاقائی