پاکستان کو تنہا ء کرنے کی بھارتی خوش فہمی جلد دور کر دیں گے :سیکرٹری خارجہ

پاکستان کو تنہا ء کرنے کی بھارتی خوش فہمی جلد دور کر دیں گے :سیکرٹری خارجہ

اسلام آباد(اے این این )سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چوہدری نے کہاہے کہ پاکستان کو تنہا ء کرنے کی بھارتی خوش فہمی بہت جلد دور کر دیں گے،پاکستان میں بھارتی مداخلت کے ڈوزئیر کو حتمی شکل دے دی گئی، اگلے ہفتے مختلف ممالک کو بھیجے جائیں گے ، وزیراعظم کے ایلچیوں کے دوروں کے بھی اچھے نتائج سامنے آ رہے ہیں ، بھارت نے چھوٹے ممالک پر دبا ؤڈال کر سارک کانفرنس ملتوی کرائی، بھارتی ہائی کمشنر کو بلا کر واضح پیغام د ے دیاہے کہ کسی قسم کی دراندازی برداشت نہیں کی جائے گی ،ہم ہر قسم کی صورت حال سے نمٹنے کیلئے مکمل طور پر تیار ہیں۔قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے خارجہ امور کو بریفنگ دیتے ہوئے اعزاز احمد چوہدری نے کہا کہ بھارت نے 29 ستمبر کو ایل او سی پر کوئی سرجیکل اسٹرائیک نہیں کی بلکہ ایل او سی پر سیز فائر کی خلاف ورزی کرتے ہوئے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں پاک فوج کے 2 جوان شہید ہوئے ۔ انہوں کہا کہ لائن آف کنٹرول پر بھارتی کی جانب سے فائرنگ غیر معمولی نوعیت کا واقعہ ہے، ایل او سی کی خلاف پر بھارتی ہائی کمشنر کو بلا کر واضح پیغام دیا کہ کسی قسم کی دراندازی برداشت نہیں کی جائے گی اور ہم ہر قسم کی صورت حال سے نمٹنے کیلئے مکمل طور پر تیار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو سفارتی سطح پر تنہا کرنے کی بھارت خواہش پوری نہیں ہو گی بھارت یہ دعوی مسترد ہوا اور کئی ممالک کے سربراہان نے خود وزیراعظم نواز شریف سے رابطہ کر کے ملاقات کی، پاکستان کو تنہا کرنے کی بھاری خوش فہمی بہت جلد دور کر دیں گے، وزیراعظم نے نیوکلیئر سپلائرز گروپ کے حوالے سے ہدف کے حصول کے لئے بھی کوششیں کی جبکہ سارک کانفرنس کا بائیکاٹ کر کے بھارت نے اچھا نہیں کیا بھارت نے چھوٹے ممالک پر دبا ؤڈال کر سارک کانفرنس ملتوی کرائی۔ سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ پاکستان میں بھارتی مداخلت کے ڈوزئیر کو حتمی شکل دی جا چکی ہے، اگلے ہفتے یہ ثبوت مختلف ممالک کو بھیجے جائیں گے جبکہ وزیراعظم نواز شریف کے ایلچیوں کے دوروں کے بھی اچھے نتائج سامنے آ رہے ہیں اور اس حوالے سے پاکستان چین اور امریکا کے ساتھ بھی رابطے میں ہے۔ اعزاز احمد چوہدری نے کہا کہ وزیر اعظم نے برہان مظفر وانی کی شہادت کے اگلے روز ہی سخت بیان جاری کیا اور عالمی سربراہان اور اداروں کو خطوط لکھے، وزیراعظم کے اقوام متحدہ میں خطاب نے کشمیریوں کی تحریک آزادی کو مضبوط کیا جب کہ او آئی سی کا کشمیر کے حوالے سے کردار بھی اچھا ہے، اس کے علاوہ پاکستان نے اقوام متحدہ انسانی حقوق کونسل کو اپنا مشن مقبوضہ کشمیر بھیجنے کا بھی کہا۔ انہوں نے کہا کہ کشمیریوں کی تحریک ان کی اپنی ہے اور حق خود ارادیت کی جدوجہد کسی صورت بھی دہشت گردی نہیں ہے، سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ بان کی مون بھی مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کی تصاویر دیکھ کر صدمے میں آ گئے جب کہ پاکستان کشمیریوں کی سفارتی اور اخلاقی سطح پر حمایت جاری رکھے گا، بھارت پاکستان پر دہشت گردی کے بے بنیاد الزامات لگا رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سعودی عرب، عمان اور وسطی ایشیائی ریاستوں نے پاک چین اقتصادی راہداری کے ذریعے تجارت میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے ۔

مزید : صفحہ اول