ڈاکٹروں کو مستقل نہ کرنے پر چیف سیکرٹری ،سیکرٹری صحت اور ڈی جی سے جواب طلب

ڈاکٹروں کو مستقل نہ کرنے پر چیف سیکرٹری ،سیکرٹری صحت اور ڈی جی سے جواب طلب

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے جسٹس روح الامین اورجسٹس سید افسرشاہ پرمشتمل دورکنی بنچ نے 2011ء میں کنٹریکٹ پربھرتی ڈاکٹروں کو تاحال مستقل نہ کرنے پر خیبرپختونخوا کے چیف سیکرٹری ٗ سیکرٹری صحت اورڈی جی ہیلتھ کونوٹس جاری کرکے جواب مانگ لیاہے فاضل بنچ نے یہ احکامات گذشتہ روز امین الرحمان ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائردرخواست گذار ڈاکٹراشراق سمیت 16ڈاکٹروں کی رٹ پٹیشن پرجاری کئے اس موقع پر عدالت کو بتایا گیاکہ درخواست گذار2011میں ایک سال کیلئے مختلف ہسپتالوں میں ایڈہاک پربھرتی ہوئے اورہرسال ان کے کنٹریکٹ میں توسیع ہوتی رہی اس دوران انہوں نے مستقلی کیلئے احتجاج شروع کیا اور2015ء میں مستقلی کاایکٹ نافذ ہوا ایکٹ کے بعد دیگرملازمین کو تو کردیاگیامگردرخواست گذاروں کو نظراندازکیاگیاجبکہ بعض ملازمین کو ہائی کورٹ کے احکامات پر مستقل کیاگیا جبکہ درخواست گذاروں نے بھی رٹ کی کہ ان کے ساتھ بھی یکساں سلوک کیاجائے کیونکہ ایک نوٹی فکیشن پربھرتی ہوئے لیکن پسند اورناپسند کی بنیاد پر مستقلی کی جارہی ہیں فاضل بنچ نے ابتدائی سماعت کے بعد چیف سیکرٹری ٗ سیکرٹری صحت اورڈی جی ہیلتھ کونوٹس جاری کرکے جواب مانگ لیاہے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر