ڈبلیو ایس ایس پی سوات کے چیف ایگزیکٹیو اپنے عہدے پر بحال

ڈبلیو ایس ایس پی سوات کے چیف ایگزیکٹیو اپنے عہدے پر بحال

پشاور(نیوزرپورٹر)پشاورہائی کورٹ کے چیف جسٹس مظہر عالم میانخیل اورجسٹس اکرام اللہ خان پرمشتمل دورکنی بنچ نے خیبرپختونخواحکومت کی جانب سے ڈبلیو ایس ایس پی سوات کے چیف ایگزیکٹوکی برطرفی معطل کرتے ہوئے انہیں اپنے عہدے پربحال کردیاہے اورصوبائی حکومت کو نوٹس جاری کرکے جواب مانگ لیاہے فاضل بنچ نے یہ عبوری احکامات اعجازصابی ایڈوکیٹ کی وساطت سے دائردرخواست گذار پرویزخان کی رٹ پرجاری کئے اس موقع پراعجازصابی ایڈوکیٹ نے عدالت کو بتایا کہ درخواست گذار کی بطورچیف ایگزیکٹوآفیسر ڈبلیو ایس ایس پی سوات تقرری ہوئی اورانہوں نے یکم جون2016ء کو اپنے عہدے کا چارج لیا جبکہ بھرتی کے عمل میں جو امیدوارشامل ہوئے تھے ان میں سے تیرہ افراد شارٹ لسٹ ہوئے تھے بعدازاں ڈبلیو ایس ایس پی کے بورڈ آف ڈائریکٹرزنے تین امیدواروں کی سمری تیارکی اوروزیراعلی کو ارسال کی جس پروزیراعلی نے درخواست گذار کے نام کی منظوری دے کران کی تقرری کانوٹی فکیشن جاری کیاانہوں نے عدالت کو مزید بتایا کہ ڈبلیو ایس ایس پی قوانین کے تحت یہ تقرری 5سال کے عرصہ کے لئے تھی اوربعدازاں کارکردگی کی بنیاد پر اس میں ہرسال توسیع ہوتی ہے تاہم چند روز سیکرٹری لوکل گورنمنٹ نے درخواست گذار کو بلاجوازطورپر اپنے عہدے سے برطرف کر دیاہے جوکہ غیرقانونی اورغیرآئینی اقدام ہے کیونکہ ڈبلیو ایس ایس پی رولزمیں برطرفی کیلئے کوئی طریقہ وضع نہیں کیا گیا ہے لہذاسیکرٹری لوکل گورنمنٹ کانوٹی فکیشن کالعدم قرار دیا جائے فاضل بنچ نے ابتدائی دلائل کے بعدنوٹی فکیشن معطل کرکے صوبائی حکومت سے جواب مانگ لیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر