وزیر اعلیٰ پنجاب کی زیر صدارت کابینہ کا اجلاس ،رواں سال کاشتکاروں کو 70ارب کے بلا سود قرضے دینے کی منظوری ،سیف سٹی پراجیکٹ کا دائرہ 6شہروں تک بڑھانے کا فیصلہ

وزیر اعلیٰ پنجاب کی زیر صدارت کابینہ کا اجلاس ،رواں سال کاشتکاروں کو 70ارب کے ...
وزیر اعلیٰ پنجاب کی زیر صدارت کابینہ کا اجلاس ،رواں سال کاشتکاروں کو 70ارب کے بلا سود قرضے دینے کی منظوری ،سیف سٹی پراجیکٹ کا دائرہ 6شہروں تک بڑھانے کا فیصلہ

  

لاہور(نیوز دیسک )وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف کی زیر صدارت پنجاب کابینہ کا اجلاس منعقد ہوا ، چار گھنٹے تک جاری رہنے والے اجلاس میں پنجاب کابینہ نے چھوٹے کاشتکاروں کو جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے بلا سود قرضے فراہم کرنے کے تاریخ ساز پروگرام کی منظوری دی، بلا سود قرضوں کے پروگرام کے لئے حکومت پنجاب اور مالیاتی اداروں کے مابین معاہدوں ، متعدد ترقیاتی منصوبوں ، پروگراموں اور ترقیاتی سکیموں کیلئے فنڈز کے اجراء کی بھی منظوری دی گئی،پنجاب کابینہ کے اجلاس کو محرم الحرام کے دوران عوام کے جان و مال کے تحفظ کے لئے کئے جانے والے سیکورٹی انتظامات ، پولیس نظام میں اصلاحات اور جدید ٹیکنالوجی کے استعمال کے ذریعے امن و امان کی صورتحال کو بہتر بنانے کے حوالے سے بریفنگ دی گئی۔

وزیر اعلی محمد شہباز شریف نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب کے 202 تھا نوں میں فرنٹ ڈیسک کا قیام عمل میں لایا جا چکا ہے جبکہ 31 دسمبر 2016ء تک پنجاب کے تمام تھانوں میں فرنٹ ڈیسک قائم کر دیئے جائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ مدارس اور مساجد کی جیو ٹیگنگ کا عمل مکمل کر لیا گیا ہے ،لاہور کے بعد ڈولفن فور س کو پنجاب کے بڑے شہروں میں متعارف کرایا جائے گا جس پر کام شروع کر دیا گیا ہے، لاہور کے بعد سیف سٹی پراجیکٹ کو چھ دیگر شہروں تک بڑھایا جائے گا ، ملتان ، بہاولپور ، سرگودھا، گوجرانوالہ، راولپنڈی اور فیصل آباد میں بھی سیف سٹی پراجیکٹ شروع کئے جائیں گے۔وزیر اعلی نے کہا کہ زرعی شعبے کی ترقی اور فی ایکڑزرعی پیداوار میں اضافے کیلئے فقید المثال کسان پیکیج دیا گیا ہے جس کے زرعی شعبے کی ترقی پر انتہائی مثبت اثرات مرتب ہو ں گے ، چھوٹے کاشتکارو ں کو جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے مالی طورپر مستحکم بنایا جائے گا ،خطے کی تاریخ میں چھوٹے کاشتکاروں کو ریلیف دینے کیلئے پہلی بار بلا سود قرضوں کا پروگرام بنایا گیا ہے اور اس پروگرام سے مجموعی طور پر پانچ لاکھ کسان مستفید ہوں گے ۔

انہوں نے کہا کہ رواں برس 70 ارب روپے کے بلا سود قرضے چھوٹے کاشتکاروں کو دیں گے اور کاشتکاروں کو سمارٹ فون کے ذریعے فوری بلا سود قرض ملے گا ، کسان کی زرعی پاس بک کو بھی ڈیجیٹل کر دیا گیا ہے ،2 ارب روپے سے ’’خادم پنجاب زرعی انڈومنٹ فنڈ‘‘ کے قیام کا بھی فیصلہ کیا گیا ہے ۔کابینہ کو ساہیوال کول پاور پراجیکٹ، بہاولپور میں قائد اعظم سولر پارک میں لگائے جانے والے سولر پاور پراجیکٹ اور بھکی گیس پاور پلا نٹ شیخوپورہ میں لگائے جانے والے بجلی کی منصوبوں پر ہونے والی پیشرفت کے بارے بریفنگ دی گئی۔

کابینہ نے پنجاب حکومت کی جانب سے اپنے وسائل سے لگائے 100 میگا واٹ کے سولر منصوبے کو پرائیویٹائز کرنے کے فیصلے کی توثیق کی۔وزیر اعلی نے کہا کہ1320 میگا واٹ کا ساہیوال کول پاور پراجیکٹ دسمبر 2017 ء کی بجائے جون 2017ء میں بجلی فراہم کرے گا،اس منصوبے پر جتنی برق رفتاری سے کام کیا جا رہا ہے اسے چین نے’’ پنجاب سپیڈ‘‘ قرار دیا ہے جو کہ پورے پاکستان کا اعزاز ہے ، اگر تمام محکمے اور ادارے اسی رفتار سے کام کریں تو ملک و قوم کی تقدیر بدل جائے گی۔انہوں نے کہا کہ قائد اعظم سولر پارک بہاولپور میں 300 میگا واٹ کا سولر منصوبہ نیشنل گرڈ میں بجلی فراہم کر رہا ہے، بھکی میں 1180 میگا واٹ کے گیس پاور منصوبے پر بھی انتہائی تیزی سے کام جاری ہے اور اس منصوبے سے عوام کو بجلی کا یونٹ 6روپے 36 پیسے میں ملے گی ۔انہوں نے کہا کہ ماضی میں بجلی کے مہنگے منصوبے لگائے گئے جس سے فی یونٹ لاگت بھی بڑھی جبکہ موجودہ حکومت کے بجلی منصوبے مکمل ہونے سے لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ ہو گا اور عوام کو سستی بجلی ملے گی۔

اجلاس میں پنجاب کابینہ کے رولز آف بزنس نمٹانے کیلئے فنانس و ڈویلپمنٹ اورلیجسلیٹو سٹینڈنگ کمیٹیوں کے قیام کی منظوری دی گئی اور یکم جولائی2017ء سے جاری ہونے والی سپلیمنٹری گرانٹس کی منظوری دی گئی۔رواں مالی برس 2016-17ء کے دوران انتظامی محکموں کو ترقیاتی بجٹ کے دوبارہ اجراء اور مختلف ترقیاتی سکیموں کی نشاندہی ، عملدرآمد اور مانیٹرنگ کے میکنزم کی منظوری بھی دی گئی، پنجاب کے دو اضلاع ننکانہ صاحب اورچنیوٹ میں ڈسٹرکٹ پاپولیشن ویلفےئر آفیسرز کے دفاتر کے قیام ،ملتان اور لاہورریجنل ٹریننگ اداروں کی تنظیم نو اور 30پوسٹوں جبکہ پاپولیشن ویلفےئر ٹریننگ انسٹی ٹیوٹ لاہور کی استعداد کار بڑھانے کیلئے 25 نئی اسامیوں کی منظوری دی گئی۔وزیر اعلی نے کہا کہ پنجاب حکومت نے 300 ارب روپے کی مجموعی لاگت سے پینے کے صاف پانی کی فراہمی کا پروگرام شروع کیا ہے ، رواں مالی برس اس پروگرام پر 30 ارب روپے خرچ کئے جا رہے ہیں ۔

مزید : قومی