کروڑوں روپے فراڈ کے الزام میں ایس ایس پی لیہ گرفتار ،10روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے

کروڑوں روپے فراڈ کے الزام میں ایس ایس پی لیہ گرفتار ،10روزہ ریمانڈ پر نیب کے ...

 ملتان(آن لائن)قومی احتساب بیورو (نیب) نے کروڑوں روپے کے غبن کے الزام میں لیہ کے سینئر سپرنٹنڈنٹ پولیس (ایس ایس پی) انوسٹی گیشن محمد باقر کو گرفتار کرلیا ۔ایس ایس پی محمد باقر پر پنجاب کانسٹیبلری (پی سی) کے اکاؤنٹ میں 21 کروڑ 33 لاکھ روپے کے غبن کا الزام ہے۔احتساب عدالت نے ملزم ایس ایس پی انوسٹی گیشن محمد باقر کو 10 روزہ ریمانڈ پر نیب کے حوالے بھی کردیا۔نیب ملتان کی جانب سے جاری کردہ اعلامیہ میں کہا گیا کہ اگست 2017 میں بٹالین نمبر 3 کے کمانڈر ایس ایس پی محمود الحسن کی درخواست پر اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ (اے سی ای) نے ایس ایس پی انوسٹیگیشن محمد باقر سمیت 30 ملزمان پر ایف آئی آر درج کی تھی۔درخواست گزارکے مطابق مشتبہ افراد نے پی سی کے ملازمین کے جعلی معطلی اور پھر بحالی آرڈرز بنوائے اور ان افراد کی تنخوا کو جعلی بلز کے ذریعے خفیہ اکاؤنٹس میں منتقل کیا۔انہوں نے بتایا کہ اس معاملات کی چھان بین کیلئے بنائی گئی فیکٹ فائنڈنگ ٹیم کو یہ معلوم ہوا کہ بٹالین کے انہی مخصوص ملازمین کے نام پر خفیہ بینک اکاؤنٹس بنے ہوئے ہیں۔جن ملازمین نے جعلی معطلی اور بحالی آرڈرز تیار کیے تھے ان میں کلرک عبدالجبار شاہ، جونیئر کلرک اعظم اور رشید احمد، نائب قاصد منیر، سجاد پتافی اور ارشد شامل ہیں۔محمود الحسن کے مطابق ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس افسر کو جمع کروائی گئی ان کی تنخواہ کی رسید پر دستخط جعلی تھے۔انہوں نے الزام عائد کیا کہ اس وقت حج کی ادائیگی میں مصروف نائب قاصد منیر نے انہیں ٹیلی فون پر بتایا کہ یہ تمام کام اعظم، پتافی، ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس افسر تھری بشیر احمد، سینئر آڈیٹر مصدق دریشک، آڈیٹر طاہر بخاری، ڈسٹرکٹ اکاؤنٹس آفس کے شکیل اور عدنان کی ملی بھگت کے ساتھ ہوا ہے۔انہوں نے کہاکہ اعظم نے انہیں بتایا کہ شکیل اور عدنان کی مدد سے بل بنانے کے بعد اسے دریشک اور بخاری کو دیدیا جاتا تھا۔گزشتہ برس اگست میں پی سی حکام نے اس کیس کے مشتبہ افراد عبدالجبار، اعظم، محمد علی شاہ، رحیم بخش اور ظفر اقبال کو اے سی ای حکام کے حوالے کردیا تھا۔اس کیس میں تنازع اس وقت سامنے آیا تھا جب اے سی ای حکام کی تحقیقات کے دوران نیب حکام نے انسدادِ بدعنوانی عدالت سے درخواست کی تھی کہ اس کیس کو نیب کے حوالے کیا جائے۔بعدازاں مذکورہ کیس نیب کے حوالے کردیا گیا جس نے احتساب عدالت میں اس سے متعلق عبوری ریفرنس دائر کیا ہوا تھا۔نیب حکام کی جانب سے دعویٰ کیا گیا کہ احتساب عدالت میں حتمی ریفرنس دائر کیا جاچکا ہے تاہم اب تک ملزمان کو اس کی نقول فراہم نہیں کی گئیں۔

مزید : علاقائی


loading...