سوچے سمجھے منصوبے کے تحت تحریک انصاف کو اقتدار میں لایا گیا مولانا عطاء الرحمن

سوچے سمجھے منصوبے کے تحت تحریک انصاف کو اقتدار میں لایا گیا مولانا عطاء ...

کہروڑپکا (سٹی رپورٹر) موجودہ ملکی صورت حال میں اپوزیشن جماعتوں کا حقیقی اتحاد ضروری ہے ۔جمیعت علمائے اسلام اپوزیشن کو اکٹھا رکھنے اور قومی ایشوز پر ایک جیسا موقف اختیار کرنے کیلئے اپنی ایک کوشش ضرور کرے گی ۔ شہباز شریف کی گرفتاری سراسر انتقامی کاروائی ہے ۔ میٹرو بس(بقیہ نمبر15صفحہ12پر )

لاہور کی لاگت کی تحقیقات کرنے والے 85ارب روپے سے بننے والی پشاور میٹرو بس کی تحقیقات کیوں نہیں کراتے ۔ یہ بات سابق وفاقی وزیر اور جے یو آئی (ف) کے سینیٹر مولانا عطا الرحمن نے گزشتہ رات کہروڑپکا پہنچنے پر میاں اشفاق عاربی اور مشتاق عاربی کی رہائش گاہ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی ۔ انھوں نے کہا کہ ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت تحریک انصاف کو اقتدار میں لایا گیا ۔ اس وقت ملک میں سیاست کا توازن بھی نہیں رہا ۔ عمران خان جس ٹیم کے ذریعے تبدیلی کے دعوے کر رہے ہیں یہ سارے لوگ ق لیگ ، مشرف کابینہ اور پی پی پی کابینہ کا پہلے ہی حصہ رہ چکے ہیں ۔ انھوں نے کہا کہ حکومتی وزراء کا رویہ بچگانہ ہے ۔ سینٹ اور قومی اسمبلی میں فواد چوہدری اور پرویز خٹک کے بیانات پارلیمانی روایات اور آداب کے قطعی خلاف ہیں ۔ ان لوگوں سے حکومت چلتی نظر نہیں آتی ۔ مولانا عطا ء الرحمن نے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ موجودہ حکومت کے خلاف تحریک چلانے کی کیا ضرورت ہے کیونکہ اس حکومت کو اس کے اپنے اقدامات ہی لے ڈوبے گے ۔انھوں نے کہا کہ جمیعت علمائے اسلام تحفظ ناموس رسالتؐ کیلئے کبھی بھی پیچھے نہیں ہٹے گی کیونکہ یہ ہمارے ایمان کا مسئلہ ہے ۔ میں عوام سے بھی کہوں گا کہ وہ بھی لادین عناصر کی حرکتوں پر نظر رکھیں ۔ ایسا نہ ہو کہ کسی بھی حیلے بہانے سے قادیانی طبقے کو نوازنے کی کوشش کی جائے ۔ اس موقع پر مفتی ظفر اقبال آف چیچہ وطنی ، محمد امیر ساجد ، مولانا منیر احمد ریحان بھی موجود تھے ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...