بٹ خیلہ میں گرینڈ اصلاحی جرگہ کا انعقاد

بٹ خیلہ میں گرینڈ اصلاحی جرگہ کا انعقاد

بٹ خیلہ(بیورورپورٹ ) گرینڈ اصلاحی امن جرگہ کے اجلاس میں مسائل کے انبارلگ گئے، تحصیل درگئی کا کوئی پرسان حال نہیں،سینکڑوں طالبات کی تعلیم سے محرومی پر اجلاس میں انتہائی افسوس کااظہار، سٹریٹ کرائم کی روک تھام اور منشیات فروشوں کے خلاف کاروائی کا مطالبہ،درگئی ہسپتال میں مستقل ایم ایس کی تعیناتی، الٹراساؤنڈ کیلئے میل فیمیل سٹاف کی تعیناتی سمیت، ڈاکٹرز کیلئے بنگلے/کوارٹرز ،مسجد،لفٹ کی تعمیر،سپیشل بجلی لائین ،سوئی گیس اور جنریٹر کی فراہمی کا مطالبہ، تحصیل درگئی کے جانوروں کے ہسپتال میں مفت ادویات کی فراہمی کا مطالبہ،سوئی گیس کی کم پریشر سے عوام کو سالہا سال کے شور شرابے اور عدالتی کیسسز کے باوجود نجات نہ ملی،واپڈا بجلی چوروں کے خلاف بھرپور کاروائی کرے تاہم بوسیدہ تاروں کو فوری تبدیل،اوور لوڈ فیڈروں اور ٹرانسفارمروں کابندوبست کیاجائے،نئے گریڈ سٹیشن انتہائی ضروری ہے۔تفصیلات کے مطابق گرینڈ اصلاحی امن جرگہ تحصیل درگئی کا ایک اہم اجلاس زیرصدارت حاجی اکرم خان بمقام ٹمبرایسوسی ایشن کے مرکزی دفتر میں منعقد ہوا۔جس میں مکرمِ خان صباء، چیئرمین غنی الرحمان،محمد حسن ماما،ملک محمد سرور، عظیم اللہ بابو،حاجی نیاز محمد، انجینئر گل فراز خان، حاجی صبر صادق،حاجی امیرزمان خان،ہمایون خان، وحید مراد خان، عبدالقدیر خان،شریف خان، لعل وہاب خان،سبحان شیرین خان،عبدالعظیم خان،اجمل خان، زیارت خان،اسرار خان، نوشیرخان،اختر خان،فضل باچا، رحیم انور خان، محمدطارق خان،بصیر حیات، مصنف شاہ اور دیگر نے شرکت کی۔اجلاس میں تحصیل درگئی میں طلباء اور طالبات رواں داخلوں سے محروم ہونے اور تعلیم کے حصول سے رہ جانے پر انتہائی افسوس کااظہار کرتے ہوئے فوری طور پر سخاکوٹ گرلز کالج ، ٹیکنیکل کالج خرکئی کو چالو کرنے اور ایلیمنٹری کالج درگئی میں متبادل کے طور پر کلاسسز کے اجراء کا مطالبہ کیا گیا۔درگئی ہسپتال میں مستقل ایم ایس کی تعیناتی سمیت دیگر سہولیات فراہم کرنے کا بھی مطالبہ کیاگیا۔درگئی بازار میں بے جا گاڑیوں کے کھڑے ہونے اور عوام کو آنے جانے میں تکلیف کا سامنا کرنے پر مقامی انتظامیہ اپنے فرائض ادا کرے،سٹریٹ کرائم میں اضافے پر تشویش کا اظہار کیا گیا اور منشیات فروشوں کے خلاف قانونی کاروائی کرنے پر زور دیاگیا۔ٹی ایم اے درگئی زمینوں کی ریٹ دوسال سے مقرر نہیں کررہے فوری دس فی صد کے حساب سے تینوں سالوں کے ریٹ جاری کرے۔ملاکنڈ تھری پراجیکٹ جو اربوں روپے امدن کاذریعہ ہے ٹھیکدار سے لے کر حکومت سرکاری ادارے کی تحویل میں چلائیں۔درگئی تا ہری چند روڈ پر کام نہ ہونے کیلئے متعقلہ ٹھیکدار سے باز پرس کی جائے اور سڑک کو فوری تعمیر کیاجائے۔جبن تا ہریانکوٹ مائنر نہر کو صاف اور اس پر متعلقہ افراد کی ڈیوٹی کویقینی بنایاجائے۔گرینڈ اصلاحی امن جرگہ کے رجسٹریشن کاغذات ایک سال بعد ملاکنڈ کے دفتر سے پشاور کو منتقل ہوئے اب وہا ں کتنا وقت لے گاانتظار رہے گا یا متعلقہ دفتر اپنا فرض پورا کرے گی تاہم جلد رجسٹریشن کی جائے تاکہ فلاحی کاموں میں تیزی لایاجاسکے۔اجلاس میں درگئی بازار میں پبلک لائبریری، پریس کلب بلڈنگ اور کمیونٹی ہال کی تعمیرکا بھی مطالبہ کیاگیا۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...