خسرہ ایک جان لیوا اور متعدی بیماری ہے ،شاہ رخ خان

خسرہ ایک جان لیوا اور متعدی بیماری ہے ،شاہ رخ خان

ٹانک(نمائندہ خصوصی)خسرہ ایک جان لیوا وبائی مرض ہے جو آسانی کے ساتھ ایک سے دوسرے میں منتقل ہو جاتا ہے اور بہت جلد یہ وبائی مرض تدارک نہ ہونے کی صورت میں علاقہ کو اپنی لپیٹ میں لے لیتا ہے خسرہ کے مریضوں کی بڑھتی ہوئی تعداد کی وجہ سے محکمہ صحت کی جانب سے خسرہ کے مرض سے بچاؤ کے لئے 15اکتوبر سے لیکر 26اکتوبر تک انسداد خسرہ مہم چلائی جا رہی ہے ٹانک میں خسرہ سے بچاؤ کے لئے چلائی جانیوالی مہم میں ضلعی اور محکمہ صحت انتظامیہ کی جانب سے تمام انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں مہم کی کامیابی کے لئے ہم سب کو ملکر کردار ادا کرنا ہو گا ان خیالات کا اظہار ڈپٹی کمشنر ٹانک شاہ رخ علی خان اور ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفسیر ڈاکٹر عمر شاہ نے انسداد خسرہ مہم کے حوالے سے ٹانک میں اٹھانے جانیوالے اقدامات کے بارے میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ انسداد خسرہ مہم کے دوران خصوصی ٹیمیں تشکیل دی گئی ہیں اس مہم میں 9 ماہ سے پانچ سال تک کی عمر کے بچوں کو خسرہ سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے جائیں گے انہوں نے کہا کہ خسرہ بھی دیگر وبائی امراض کی طرح ایک خطرناک اور جان لیوا مرض ہے اس لئے والدین قومی ذمہ داری کا مظاہرہ کرتے ہوئے خسرہ کی تشکیل کردہ ٹیموں کے ساتھ بھرپور تعاون کریں اور اپنے بچوں کو ٹیکے ضرور لگوائیں تاکہ علاقہ کو اس وبائی مرض کے اثرات سے محفوط رکھا جا سکے ان کا مذید کہنا تھا کہ خسرہ مہم کی کامیابی کے لئے عوام ،سول سوسائیٹی ،میڈیا ،علماء کرام اور دیگر مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والے افراد کا تعاون انتہائی ناگزیز ہے اور ان کی امداد کے بغیر مذکورہ بیماری کے اثرات سے بچنا مشکل ہے اس لئے وہ انتظامیہ کے ساتھ تعان کو یقینی بنائیں اور عوام خسرہ کے خلاف شعور اجاگر کرنے میں اپنا اہم کردار ادا کریں تاکہ ہم سب ملکر اپنی آنے والی نسلوں کو بیماریوں سے پاک معاشرہ دے سکیں۔۔۔۔۔

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...