DHA اوورسیز ویلی اسلام آباد کے متاثرین کی فریاد ، 12 سال سے پلاٹوں پر قبضہ نہیں دیا گیا

DHA اوورسیز ویلی اسلام آباد کے متاثرین کی فریاد ، 12 سال سے پلاٹوں پر قبضہ نہیں ...
DHA اوورسیز ویلی اسلام آباد کے متاثرین کی فریاد ، 12 سال سے پلاٹوں پر قبضہ نہیں دیا گیا

  


دبئی (طاہر منیر طاہر )انجمن متاثڑین ڈی ایچ اے اوورسیز ویلی کا ایک اجلاس گزشتہ دنوں شارجہ میں ہوا جس میں امارات بھر سے متاثرین DHAاوورسیز ویلی نے شرکت کی۔ تقریب کے مہامن خصوصی پاکستان تحریک انصاف دبئی کے جنرل سیکرٹری محمد شاید خان تھے۔ امارات بھر سے آئے متاثرین میں سید علی حدر زیدی، محمد ذیشان ، راشد منصور، خالد بنگش ، محمد خلیل ، ناصر عباس ، شفیق الرحمٰن ، ظہیر احمد مغل ، سید فیصل جاوید ، اعجاز خان ، ڈاکٹر عمران ، وقار احمد خان ، عبدالشکور ، ظہور احمد ، جاوید اقبال ، محمد شاہد گیگا ، چودھری ذوالفقار علی ، محمد سعید ، نوید احمد ، اختر عباس ، محمد ارشد ، عابد میر ، منیر فاروقی ، عظمت علی خان ، شفیق الحسن ، فاروق خان ، محمد ابراہیم ، خرم شہزاد ، ہارون اقبال ، عاصم نعیم ، محمد شفقت ، محمد شکیل ، عقیل الرحمن بٹ کے علاوہ متعدد دوسرے متاثرین شامل تھے۔

اس موقع پر متاثرین نے اپنے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے دیارغیر میں رہتے ہوئے ڈی ایچ اے پر بھروسہ کر کے سرمایہ کاری کی اور ڈی ایچ اے اوورسیز ویلی میں پلاٹوں کے حصول کے لئے درخواستیں دیں ، تمام اففاط بھی ادا کردیں لیکن بارہ سال کا عرصۃ گزرنے کے باوجود اوورسیز ویلی میں ہمیں پلاٹ نہیں دیئے گئے۔پلاٹوں کے حصول کے لئے ہم دن رات کوشش کر رہے ہیں لیکن تاحال کوئی کامیابی نہیں ہوئی۔ پلاٹوں کے حصول کے لئے بذریعہ سفارتخانہ پاکستان ابو ظہبی اور قونصلیت آف پاکستان دبئی کے ذریعے درخواستیں دینے کی کوشش کی گئی لیکن سفارتخانہ اور قونصلیت نے ہماری درخواست ہی وصول نہیں کی۔ DHAاوورسیز ویلی کی طرف سے بھی کوئی خاطرخواہ اور تسلی بخش جواب نہیں دیا جاتا بلکہ اب تو صورتحال اور بھی خراب ہوگئی ہے اور حصول پلاٹ کے لئے جانے والوں کو دھکے مارے جاتے ہیں۔ متاثرین DHAاوورسیز ویلی نے کہا کہ ہم نے اپنی حق حلال کی کمائی سے پاکستان میں سرمایہ کاری کی تاکہ ہماری ملک کی معیشت مضبوط ہو ۔ ہم نے سرمایہ کسی اور ملک میں نہیں لگایا بلکہ DHA پر بھروسہ اور اعتماد کرتے ہوئے دن رات کی محنت سے حاصل کردہ پونجی DHAاوورسیز ویلی پر لگا دی جہاں سے تاحال کچھ نہیں ملا۔ متاثرین نے کہا کہ بہت سے لوگ پلاٹوں کے حصول کی امید کی آس لگائے اس دنیا سے رخصت ہوچکے ہیں جبکہ بہت سے لوگ انویسٹمنٹ کی رقم کو ڈوبتے دیکھ کر بیمار ہوگئے ہیں۔ متاثرین نے چیف آف آرمی سٹاف ، چیف جسٹس اور وزیراعظم پاکستان سے صورتحال کا جائزہ لینے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : قومی /عرب دنیا


loading...