پوری دنیا کو دھمکیاں دینے والے امریکی صدر کی بیوی نے ہی انہیں بڑا جھٹکا دیدیا ، میڈیا سے گفتگو میں شوہر کے بارے میں ایسی بات کہہ دی کہ ٹرمپ کا منہ بھی کھلا کا کھلا رہ جائے گا

پوری دنیا کو دھمکیاں دینے والے امریکی صدر کی بیوی نے ہی انہیں بڑا جھٹکا دیدیا ...
پوری دنیا کو دھمکیاں دینے والے امریکی صدر کی بیوی نے ہی انہیں بڑا جھٹکا دیدیا ، میڈیا سے گفتگو میں شوہر کے بارے میں ایسی بات کہہ دی کہ ٹرمپ کا منہ بھی کھلا کا کھلا رہ جائے گا

  



واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن )امریکی صد ر ڈونلڈ ٹرمپ پوری دنیا کو دھمکیاں لگاتے پھرتے ہیں لیکن ان کے گھر میں دیکھیں تو ان کی بیوی نے ان کے خیالات کے ساتھ اتفاق کرنے سے صاف انکار کرتے ہوئے کہا کہ ” میری اپنی آواز ہے اور میں اپنی رائے رکھتی ہوں ۔“

تفصیلات کے مطابق امریکی خاتون اول اس وقت اکیلی افریقہ کے چار ملکوں کا دورہ کر رہی ہیں جہاں انہوں نے اہرام مصر اور غزہ سمیت کئی تاریخی شہروں اور عمارتوں کا دورہ کیا اور اس موقع پر انہوں نے صحافیوں سے غیر رسمی گفتگو بھی کی ۔اس موقع پر ملانیا ٹرمپ نے اپنے شوہر اور امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے کیے جانے والے ٹویٹس کی حمایت کرنے اور ان سے اتفاق کرنے سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ میری اپنی رائے ہے ۔

گزشتہ روز ملانیا ٹرمپ نے بریٹ کواناگ کی امریکی سپریم کورٹ میں تعیناتی پرحمایت کریت کرتے ہوئے کہا کہ ” میرے خیال میں وہ اس عہدے کیلئے بہترین امیدوار ہیں ۔“تاہم اپنے شوہر کے حوالے سے گفتگو کے دوران انہوں نے کہا  وہ ہمیشہ اپنے شوہر کے ٹویٹس سے اتفاق نہیں کرتیں ۔ان کا کہناتھا کہ میری اپنی رائے اور آواز ہے اس لیے میرے لیے یہ بہت اہم ہے کہ جو میں محسوس کرتی اور اظہار کرتی ہوں ۔یاد رہے کہ ملانیا افریقی ممالک کا دورہ کر رہی ہیں اور ان ممالک کے حوالے سے کچھ عرصہ قبل ڈونلڈ ٹرمپ نے کوئی اچھے خیالات کا اظہار نہیں کیا تھا ۔لیکن اقوام متحدہ کے اجلاس میں امریکی صدر کا کہناتھا کہ ہم دونوں کو افریقہ بہت پسند ہے کیونکہ وہ بہت خوبصورت ہے ۔

یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ ملانیا ٹرم نے اپنے بیرون ملک دورے کے دوران ایک اور ایسا کام کیا جو کہ مبینہ طور پر ان کے شوہر کو سخت ناپسند ہے اور وہ کام یہ ہے کہ ملانیا نے اپنے دورے میں ” سی این این “ پر خبریں سنی اور حالات حاضرہ پر نظر رکھی ۔نیویارک ٹائمز کے مطابق خاتون اول نے ایئر فورس ون پر سی این این لگایا اور خبریں سنیں ۔

مزید : بین الاقوامی


loading...