ناجائز ٹیکس ، ملک بھر میں 50 فیصد آئل ملز بند ہوگئیں

ناجائز ٹیکس ، ملک بھر میں 50 فیصد آئل ملز بند ہوگئیں
ناجائز ٹیکس ، ملک بھر میں 50 فیصد آئل ملز بند ہوگئیں

  


ملتان (ویب ڈیسک) ملک بھر میں 50 فیصد آئل ملز ناجائز ٹیکسیشن کی وجہ سے بند ہوچکی ہیں اور اس وقت رحیم یار خان ، راجن پور ، ڈیرہ غازی خان سمیت جونبی پنجاب کے مختلف علاقوں میں بنولہ کی 80 فیصد خریداری بند کر دی گئی ہے۔

روزنامہ خبریں کے مطابق یہ بات آل پاکستان آئل ملزایسوسی ایشن کے صدر خواجہ محمد فاضل نے ایک ہنگامی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہی جس میں بہاولپور سے محمد رفیع ، وہاڑی سے سلیم وڑائچ ، الیاس وڑائچ ، میاں عبدالرزاق ، انصر خان بابر ، بورے والا سے محمد طارق اور حاجی محمد انور اور دیگر نے شرکت کی۔

خواجہ فاضل نے کہا کہ آئل ملزما ملکان ٹیکس باقاعدگی سے ادا کرتے ہیں اور کرتے رہی گے لیکن ناجائز ٹیکس ہرگزاادا نہیں کریں گے۔ ناجائز ٹیکسیشن کے خلاف وہ پہلے ہی عدالت سے رجوع کر چکے ہیں اور عدلیہ نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کوحکم دیا ہے کہ وہ ایک مانہ میں متعلقہ ایسوسی ایشن سے مذاکرات اورعدلیہ نے فیڈرل بورڈ آف ریونیو کو حکم دیا ہے کہ وہ ایک ماہ میں متعلقہ ایسوسی ایشن سے مذاکرات کر کے مسائل حل کرے لیکن ایف بی آر نے تاحال ان سے رجوع نہیں کیا جبکہ 140 میں سے 70 آئل فیکٹریاں بند ہوچکی ہین انصر خان بابر نے کہا کہ ہمارا ٹیکس 2 ارب روپے بنتا ہے مگر ہم پر 5 ارب روپے کا ٹیکس ڈال دیا گیا ہے چیئرمین ایف بی آر نے آئندہ جمعارت تک فیصلہ کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے اگر فیصلے آئل ملوں کے خلاف ہوا تو ملک بھر میں تمام آئل ملیں غیر معینہ عرصہ کیلئے بند کر دی جائیں گی۔

مزید : قومی /بزنس /علاقائی /پنجاب /ملتان


loading...