فورتھ شیڈول میں شامل 100 سے زائد افرادسکیورٹی ریڈار سے غائب ،محکمہ داخلہ پنجاب کا سی ٹی ڈی کو ڈھونڈنے کا حکم

فورتھ شیڈول میں شامل 100 سے زائد افرادسکیورٹی ریڈار سے غائب ،محکمہ داخلہ ...
فورتھ شیڈول میں شامل 100 سے زائد افرادسکیورٹی ریڈار سے غائب ،محکمہ داخلہ پنجاب کا سی ٹی ڈی کو ڈھونڈنے کا حکم

  


لاہور(ویب ڈیسک)محکمہ داخلہ پنجاب نے انسداد دہشت گردی ایکٹ1997 کے تحت 100 سے زائد فورتھ شیڈول میں شامل افراد کے سکیورٹی ریڈار سے غائب ہونے پر سی ٹی ڈی کوانہیں ڈھونڈنے کا حکم دے دیا ہے۔

سیکیورٹی ذرائع کے مطابق پنجاب میں1400 سے زائد فورتھ شیڈول میں شامل افراد جن کا تعلق مختلف کالعدم او ر مذہبی تنظیموں سے ہے میں سے100 سے زائد افراد کے بارے میں معلوم نہیں کہ وہ کہاں ہیں۔ محکمہ داخلہ کی طرف سے سی ٹی ڈی کو کہا گیا ہے کہ پتہ چلایا جائے کہ کن تنظیموں کے لوگ غائب ہیں ان کی فہرستیں بنائی جائیں‘کتنے فورتھ شیڈولرز سے انسداد دہشت گردی ایکٹ 1997کے سیکشن 11EE کے تحت شورٹی بانڈز لئے گئے ہیں جس میں تحریری طور پریقین دہانی کرائی گئی ہے کہ وہ کسی کالعدم تنظیم سے تعلق نہیں رکھیں گے اور نہ ہی بغیر اطلاع کے اپنے تھانے کی حدود سے باہرجائیں گے۔ شورٹی بانڈز میں مذکورہ یقین دہانیوں کی خلاف ورزیوں پر متعلقہ ضلع کا ڈی پی او24 گھنٹے میں فورتھ شیڈولرز کو گرفتار کرکے عدالت میں پیش کرے گا جو اس کی نظر بندی کے احکامات جاری کرے گی۔ فورتھ شیڈول میں شامل افراد سکولوں‘ کالجز ایسے ادارے جہاں21 سال سے کم عمر لڑکیاں تعلیم حاصل کر رہی ہوں یا عارضی طور پر وہاں رہائش پذیر ہوں کے قریب نہیں جا سکتے۔ یہ افراد تھیٹر ‘ سنیما‘ میلوں‘ تفریحی پارکوں‘ ہوٹل‘کلبز‘ چائے کی دکانوں‘ ریلوے سٹیشن‘ ایئر پورٹ‘ ریڈیو سٹیشن اور ٹیلی ویژن سٹیشنوں کے قریب نہیں جائیں گے۔سی ٹی ڈی کو صوبے بھر کے 1400 سے زائد تمام فورتھ شیڈولرز کی ازسرنو فہرستیں بنانے کا بھی کہا گیا ہے۔

مزید : قومی /علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...