امیر جماعت اسلامی نے سودی کاروبار اورشراب نوشی پرپابندی کا مطالبہ کر دیا

امیر جماعت اسلامی نے سودی کاروبار اورشراب نوشی پرپابندی کا مطالبہ کر دیا
امیر جماعت اسلامی نے سودی کاروبار اورشراب نوشی پرپابندی کا مطالبہ کر دیا

  


کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن) جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سینیٹر سراج الحق نے حکومت پاکستان سے سودی کاروبار اورشراب نوشی پرپابندی کا مطالبہ کر تے ہوئے کہا کہ سودی معیشت کے خاتمے کے لیے ہماری جانب سے سینٹ میں ایک بل موجود ہے جس کے مطابق پہلے پرائیویٹ سودی نظام کا خاتمہ ہو پھر سرکاری سرپرستی میں سودی نظام کا خاتمہ ممکن ہوسکے ،سودی نظام معیشت کے مقابلے میں متبادل نظام موجود ہے ،اسلام کا نظام معیشت سود سے پاک نظام ہے ۔

میڈیا رپوٹس کے مطابق امیر جماعت اسلامی  سینیٹر سراج الحْق نےادارہ نور حق میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ  سندھ میں ادارے بد ترین کرپشن کا شکار ہیں اور عوام پر خرچ ہونے کے بجائے بجٹ کا بڑا حصہ کرپشن کی نذر ہورہا ہے،سندھ کے عوام کو پیپلز پارٹی کی حکومت نے غربت ،مہنگائی ، بے روزگاری اور جہالت سے نجات نہیں دلائی ہے،عوام تعلیم ،صحت اور بنیادی ضروریات تک سے محروم ہیں ۔ 

انہوں نے کہاکہ کراچی میں امن و امان ، پانی اور بجلی کا مسئلہ سنگین ہوگیا ہے لیکن سندھ حکومت کی جانب سے کوئی سنجیدہ اقدامات نظر نہیں آرہے ،کے الیکٹرک نے عوام پر ظلم ڈھانے کا سلسلہ بند نہیں کیا ہے ، بدترین لوڈ شیڈنگ اور ناقص ترسیلی نظام کے باعث بریک ڈاو  ن نے عوام کی زندگی اجیرن بنادی ہے ، حکومت اس صورتحال کا نوٹس لے ۔

سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ گیس کی قیمتوں میں 143فیصد تک اضافہ اس سے پہلے کبھی نہیں ہوا،گیس کی قیمتوں میں اضافہ کسی صورت بھی قابل قبول نہیں ہے ایسا محسوس ہوتا ہے کہ حکومت آئی ایم ایف کی شرائط کو پورا کررہی ہے ، عوام یہ کہنے پر مجبور ہیں کہ نئی حکومت آئی ہے اور مہنگائی ساتھ لائی ہے۔

انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان لاپتا افراد کے حوالے سے اپنا وعدہ پورا کریں ،سود کا خاتمہ اللہ کا حکم اور شریعت محمدی کا تقاضا ہے ، عوام کی خواہش ہے کہ عمران خان ملک کو مدینہ جیسی اسلامی اور فلاحی ریاست بنانے کا اپنا وعدہ پورا کریں،مدینہ جیسی اسلامی ریاست سے سود، شراب، فحاشی اور تمام حرام امور کا خاتمہ ضروری ہے ۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی


loading...