شہباز شریف کی ضمنی انتخابات سے قبل گرفتاری پری پول رگنگ،نیب جرم ثابت ہونے سے پہلے کسی کی تذلیل اور میڈیا ٹرائل نہ کرے: پروفیسر ساجد میر

شہباز شریف کی ضمنی انتخابات سے قبل گرفتاری پری پول رگنگ،نیب جرم ثابت ہونے سے ...
شہباز شریف کی ضمنی انتخابات سے قبل گرفتاری پری پول رگنگ،نیب جرم ثابت ہونے سے پہلے کسی کی تذلیل اور میڈیا ٹرائل نہ کرے: پروفیسر ساجد میر

  


لاہور(ڈیلی پاکستان آن لائن)مرکزی جمعیت اہل حدیث پاکستان کے سربراہ سینیٹر پروفیسر ساجد میر نے کہا ہے کہ شہباز شریف کی ضمنی انتخابات سے قبل گرفتاری پری پول رگنگ ہے،میاں شہبازشریف کی گرفتاری انتخابی عمل میں ان کی پارٹی کو دیوار سے لگانے کیلئے عمل میں لائی گئی، اب نیب خود کو انتقامی سیاسی کارروائیوں کے الزامات سے نہیں بچاپائے گا،نیب کو جرم ثابت ہونے سے پہلے کسی کی تذلیل اور اس کا میڈیا ٹرائل نہیں کرنا چاہئے،  اس سے نیب کی ساکھ مزید متاثر ہو سکتی ہے۔

تفصیلات کے مطابق سینیٹر ساجد میر گفتگو کرتے ہوئے کہنا تھا کہ عام انتخابات کی مہم کے دوران بھی میاں نوازشریف کی نااہلی اور مریم نواز اور کیپٹن(ر) صفدر کی سزاؤں سے بھی مسلم لیگ (ن) کی انتخابی مہم متاثر بھی ہوئی تھی ،حکمران جماعت کے کئی لوگوں کے معاملات بھی نیب کے پاس زیر تفتیش ہیں،اگر دوران تفتیش کسی کو گرفتار کرنے سے ہی احتساب کے عمل کا بول بالا ہو سکتا ہے تو پھر یہ کارروائی بغیر کسی رو رعائت کے، بلاامتیاز ہونی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ میاں شہبازشریف کی گرفتاری حکومتی ایماء پر کی گئی ہے جو احتساب کے ادارے کیلئے لمحہ فکریہ ہے ، نیب پہلے ہی اپنی کارکردگی کے حوالے سے عدالت عظمیٰ کے سخت ریمارکس کی زد میں ہے،احتساب کے عمل پر یقیناً کسی کو اعتراض نہیں اور کرپشن فری معاشرے کی تشکیل ملک کے ہر شہری کا مطمع نظر ہے مگر انصاف کے تقاضوں کی عملداری میں احتساب کا عمل بے لاگ اور بلاامتیاز ہوگا اور اس سے کسی کیلئے سہولت اور کسی کیلئے یکطرفہ کڑی سزاؤں کا تاثر پیدا نہیں ہونا چاہیے ،تب ہی عوام کا احتساب کے عمل پر اعتماد قائم ہوگا، بصورت دیگر سیاسی انتقامی کارروائیوں کی کہانیوں سے ہماری تاریخ کے اوراق بھرے پڑے ہیں، چنانچہ ہر دور حکومت میں ایسی کہانیاں ہماری سیاسی تاریخ کا حصہ بنتی ہی رہیں گی۔

مزید : قومی


loading...