شہباز شریف کی گرفتاری ،خیبر پختونخوا اور پنجاب کے مختلف شہروں میں ن لیگی متوالوں کا احتجاج ،حکومت کے خلاف نعرے بازی

شہباز شریف کی گرفتاری ،خیبر پختونخوا اور پنجاب کے مختلف شہروں میں ن لیگی ...
شہباز شریف کی گرفتاری ،خیبر پختونخوا اور پنجاب کے مختلف شہروں میں ن لیگی متوالوں کا احتجاج ،حکومت کے خلاف نعرے بازی

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے صدر اور سابق وزیر اعلیٰ شہباز شریف کی نیب کے ہاتھوں گرفتاری اور دس روزہ ریمانڈ کے خلاف خیبر پختونخوا اور پنجاب  کےمختلف شہروں میں ن لیگی کارکنوں نے احتجاجی مظاہرے کئے اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کرتے ہوئے شہباز شریف کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا ۔

نجی ٹی وی چینل کے مطابق خیبر پختونخوا اور پنجاب کے مختلف شہروں میں ن لیگی کارکنوں نے سابق وزیر اعلیٰ پنجاب کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے ٹائر جلائے اور تحریک انصاف کی حکومت کے خلاف نعرے بازی کی ،مظاہرین کا الزام تھا کہ پی ٹی آئی حکومت سیاسی انتقام پر اتر آئی ہے۔خیبر پختونخوا کے ضلع ڈیرہ اسماعیل خان میں پی ایم ایل (ن) کے کارکنان نے احتجاج کیا، احتجاجی مظاہرین کا کہنا تھا کہ شہباز شریف کی گرفتاری سیاسی انتقام اور ضمنی انتخابات پر اثر انداز ہونے کا حربہ ہے۔مسلم لیگ (ن) کے صوابی میں کارکنان کی ایک بڑی تعداد سڑکوں پر آئی،کارکنان نے شہبازشریف کی گرفتاری کےخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا اورامن چوک میں ٹائروں کو جلاکر ٹریفک کے لیے سڑک بند کردی،مظاہرین نے اس موقع پرحکومت کے خلاف نعرے بازی کی اور ‘شہباز شریف کو رہا کرو’ کے نعرے لگائے۔ مظاہرین کا الزام تھا کہ پی ٹی آئی حکومت سیاسی انتقام پر اتر آئی ہے۔کارکنان کا کہنا تھا کہ جس طرح نواز شریف بے گناہ ثابت ہوئے اسی طرح شہباز بھی بے گناہ ہوں گے،ہم اورہمارے قائدین گرفتاریوں سے ڈرنے والے نہیں ہیں اورتمام مشکلات کا ڈٹ کر سامنا کریں گے۔

رحیم یار خان میں بھی لیگی کارکنان نے سابق وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کیا۔احتجاجی مظاہرین نے شاہی روڈ بلاک کر کے حکومت اور نیب کے خلاف شدید نعرے بازی کی۔اس موقع پر بات کرتے ہوئے  ضلعی صدر خالد شاہین نے کہا کہ لیگی قیادت اور ورکرز کے ساتھ زیادتی برداشت نہیں کی جائے گی۔انہوں نے کہا کہ  اگر شہباز شریف کو رہا نہیں کیا گیا تو اگلا احتجاج قومی شاہراہ پر ہوگا۔لاہور میں بھی مختلف مقامات پر لیگی کارکنوں نے شہباز شریف کی گرفتاری کے خلاف احتجاج کیا تاہم کارکنوں کی باہر نکلنے والی تعداد متاثر کن نہ تھی ،دوسری طرف مقامی لیگی عہدے داروں کا کہنا تھا کہ اتوار کے روز لاہور میں بڑی تعداد میں احتجاج کریں گے ۔

مزید : قومی


loading...