’’کرپشن ملک کا سب سے بڑا مسئلہ نہیں بلکہ ۔۔۔‘‘سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے ایسی حیران کن بات کر دی کہ سوشل میڈیا صارفین نے مسلم لیگی رہنما کے بخیئے ادھیڑ دیئے

’’کرپشن ملک کا سب سے بڑا مسئلہ نہیں بلکہ ۔۔۔‘‘سابق وزیر داخلہ احسن اقبال ...
’’کرپشن ملک کا سب سے بڑا مسئلہ نہیں بلکہ ۔۔۔‘‘سابق وزیر داخلہ احسن اقبال نے ایسی حیران کن بات کر دی کہ سوشل میڈیا صارفین نے مسلم لیگی رہنما کے بخیئے ادھیڑ دیئے

  


اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم عمران خان نے وزارت عظمیٰ سنبھالنے کے بعد لاہور میں میڈیا سے پہلی تفصیلی گفتگو میں کرپشن کو ملک کا سب سے بڑا مسئلہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ زرداری اور شریفوں کی کرپشن یونین بنی ہوئی ہے،پاکستان پورے برصغیر سے پیچھے رہ گیاہے ، غریب ملکوں کی وجہ کرپشن ہے ،وہاں وسائل کی کمی نہیں ہوتی ، کرپشن سے یہ ہوتاہے کہ جو پیسہ عوام پر خرچ کرنا ہوتاہے وہ ملک سے باہر نکل جاتاہے،شہبازشریف کی گرفتاری پر شور مچانے والے زیادہ دیر جیل سے باہر نہیں رہیں گے۔وزیر اعظم کے اس بیان پر مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما اور سابق وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال نے ایسی حیران کن بات کر دی ہے کہ آپ بھی ہکا بکا  رہ جائیں گے ۔

تفصیلات کے مطابق وزیر اعظم عمران خان نے لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کرپشن کو ملک کا سب سے بڑا مسئلہ قرار دیا تو سابق وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال بھی میدان میں آ گئے اور مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے سوالیہ انداز میں کہا کہ’’ کرپشن سے بھی بڑا مسئلہ سیاسی عدم استحکام اور پالیسیوں کا عدم تسلسل ہے، بنگلہ دیش اور بھارت میں ہم سے زیادہ کرپشن ہے مگر وہ ہم سے آگے کیسے نکلے؟‘‘۔

احسن اقبال کے اس ٹویٹ کے بعد سوشل میڈیا صارفین نے مسلم لیگ ن کے رہنما کی درگت بناتے ہوئے ایسے ایسے تبصرے اور جوابی حملے کئے کہ احسن اقبال نے خاموشی اختیار کرنا ہی مناسب سمجھا ۔معروف صحافی انور لودھی نے سابق وزیر داخلہ کے ٹویٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ’’اگر سیاسی عدم استحکام ضروری ہے تو آپ سے نئی حکومت کا ایک ماہ بھی برداشت کیوں نہیں ہو رہا؟ کیا یہ سیاسی استحکام صرف اس وقت ضروری ہے جب پیپلزپارٹی یا نون لیگ کی حکومت ہو؟‘‘ ۔

سمیرا جمیل نامی ٹویٹر صارف کا کہنا تھا کہ ’’جاہل کو بات سمجھانابھینس کےآگے بین بجانا ایک برابرہے،کرپشن ہی وہ ناسور ہےجو پچھلے تیس سالوں سے ملک کی جڑیں کھوکھلی کررہا ہے اور سیاسی عدم استحکام کی سب سے بڑی وجہ۔۔جمہوریت کے نام پر لوٹ مار کی کھلی اجازت مل جائے لٹیروں کو پھر جمہوریت مضبوط ہوگی ؟کرپشن کی بدولت ملک آج اس حال میں ہے‘‘۔

جہانگیر نامی ٹویٹر صارف نے تو احسن اقبال کی ٹویٹ پر ایسا تبصرہ کیا کہ سابق وفاقی وزیر داخلہ کو بھی اس کی توقع نہ ہو گی ،جہانگیر نامی شخص کا کہنا تھا کہ ’’ کرپشن کرنا احسن اقبال صاحب کی پارٹی کا حق ہے۔۔ ان کی ٹویٹ کا خلاصہ‘‘۔

زبیر سعید باجوہ نامی ٹویٹر صارف تو پشین گوئی کی صورت میں مسلم لیگی رہنما کو ڈراتے ہوئے ان کی ٹویٹ پر تبصرہ کیا اور کہا کہ ’’جتنا مرضی کرپشن کا دفاع کر لو ، نارووال سپورٹس سٹی کیس میں آپ بھی جلد جیل جائیں گے‘‘۔

میاں ثاقب نامی ٹویٹر صارف نے تو احسن اقبال کے اس ٹویٹ پر مسلم لیگ ن کا نیا نعرہ تخلیق کرتے ہوئے کہا کہ ’’نون کا نیا نعرہ۔۔۔۔کرپشن کو عزت دو‘‘

فریحہ کاشف نے نامی ٹویٹر صارف نے مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما احسن اقبال کو ایسا جواب دیا کہ جان کر آپ بھی حیران رہ جائیں گے ،موصوفہ فریحہ نے طنز کرتے ہوئے کہا کہ ’’ارسطو نے آج اپنے دل کی بات کہ دی کہ کرپشن اہم نہیں ہے۔ ارسطو جی آپ نے ہمیشہ اپنے قائد کو کرپشن کرتے دیکھا ہے تو آپ کے لیے کرپشن ایک معتبر چیز ہوئی نا۔ اور بنگلہ دیش اور بھارت اسلیے ہم سے آگے نکل گئے کیونکہ وہاں آپ جیسے کرپٹ لوگوں نے حکمرانی نہیں کی‘‘۔ 

نصراللہ نامی صارف کا کہنا تھا کہ’’واہ میاں ارسطو! دنیا میں کرپشن سے بڑا کوئی ایشو نہیں ھے، بنگلہ دیش اور بھارت کی معیشت بہتر ھے کیونکہ ان کے اورسیز کارکن معمولی معمولی کام کر کے روپیہ پیسہ ملک بھیجتے ہیں جبکہ پاکستانی بھائی چھوٹے موٹے کام کرنے کے لئے تیار نہیں ہیں، ان کے لئے معیاری جاب چاہئے‘‘۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...