چیئر مین نیب انصاف نہیں کررہے ، نواز شہباز حکمت عملی میں فرق ہے :مصدق ملک

چیئر مین نیب انصاف نہیں کررہے ، نواز شہباز حکمت عملی میں فرق ہے :مصدق ملک
چیئر مین نیب انصاف نہیں کررہے ، نواز شہباز حکمت عملی میں فرق ہے :مصدق ملک

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسلم لیگ ن کے رہنما سینیٹر مصدق ملک نے کہاہے کہ چیئر مین نیب انصاف نہیں کررہے اور نہ انصاف ہوتا نظر آرہاہے ، نوازشریف اور شہباز شریف کا مقدمہ ایک ہی ہے لیکن دونوں بھائیوں کے لائحہ عمل میں فرق ہے ، شہبازشریف کی گرفتاری پر صدمے میں ہونے کے باوجود نوازشریف نے بیان دیا ہے ۔

جیونیوز کے پروگرام ”جرگہ“ میں گفتگو کرتے ہوئے مصدق ملک نے کہاکہ سابق دور حکومت میں بڑے بڑے منصوبے سندھ میں شروع ہوئے ، سڑکوں کے منصوبوں پر کام ہورہا تھا اور سڑکوں کا یہ جال سی پیک سے ملے گا اور اس سے گوادر تک رسائی بھی ہوگی ، انہو ں نے کہا کہ سی پیک ایک بڑا منصوبہ ہے ، یہ ایک بڑا انفراسٹرکچر کا منصوبہ ہے ، اس کی تکمیل کے بعد جو پراجیکٹس لگنے تھے وہ غیر ملکی سرمایہ کاری سے ہی لگنا تھے جب تک یہ منصوبے اور صنعتیں نہیں لگیں گی تو پھر ہم نے اس کے لئے جو قرضے لئے ہیں وہ واپس نہ کرپائیں گے ۔ انہوں نے کہا کہ آشیانہ میں شہبازشریف کو جس طرح پکڑا گیاہے اس کے لئے میں مشرف دور کا حوالہ دینا چاہتاہوں جہاں بڑے بڑے فائلوں کے ڈھیر لگے ہوتے تھے اور کہا جاتا تھا کہ یہ نیب زدہ لوگوں کے ہیں مگر جب ان کو وزیر بنانا ہوتا تھا تووہ نیب زادے بن جاتے تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے نیب قانون میں تبدیلی نہ کرکے غلطی کی ، جب کسی ریٹائرڈ جج کو چیئر مین لگایا جاتا ہے تو اس سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ کام کرے ، موجودہ چیئر مین نیب انصاف نہیں کررہے ، نہ انصاف ہورہاہے اور نہ ہوتا نظر آرہاہے ۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے انتخابات سے قبل نواز شریف ، مریم نواز اور حنیف عباسی کو پکڑ لیا گیا اور اب جب ضمنی انتخابات آرہے ہیں تو اس سے ایک ہفتہ قبل شہبازشریف کو پکڑ لیا گیاہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ نوازشریف اور مریم نواز اس وقت صدمے کی کیفیت میں ہیں مگر شہبازشریف کی گرفتاری پر نوازشریف نے بیان دیاہے ۔ انہوں نے کہا کہ نوازشریف اور شہبازشریف کا مقدمہ ایک ہی ہے کہ ملک میں آئین اور قانون کی پاسداری ہونی چاہئے ۔ میاں نواز شریف اور شہباز شریف کے لائحہ عمل میں تھوڑا سافرق ہے ۔

مزید : قومی


loading...