پاکستان میں ادویات کے غلط استعمال سمیت کنٹرولڈ ممنوعہ منشیات کے استعمال کا انکشاف

پاکستان میں ادویات کے غلط استعمال سمیت کنٹرولڈ ممنوعہ منشیات کے استعمال کا ...

  

اسلام آباد (آن لائن)  اقوام متحدہ کے ادارہ  برائے انسداد منشیات اور جرائم (UNODC) نے وزارت نارکوٹکس کنٹرول، حکومت پاکستان کے تعاون و اشتراک سے منشیات کے علاج کے ماہرین کے لیے ایک ہفتہ پر مبنی تربیت برائے ٹرینرز(TOT) کے دوران انکشاف کیا گیا کہ گزشتہ سال اندازاً چھ فیصد آبادی  یا 6.7  ملین لوگوں نے ڈاکٹر کے نسخے میں تجویز کردہ ادویات کے غلط استعمال سمیت کنٹرول شدہ ممنوعہ منشیات کا استعمال بھی کیا۔ اس تربیتی ورکشاپ کا مقصد ملک میں منشیات کے استعمال کے پھیلاؤاور اس کے طریقوں کا اندازہ لگانا تھا۔ اس اسٹڈی نے 15 سے 64 سال کی عمر کے لوگوں میں منشیات کے استعمال کے پھیلاؤ اور طریقوں کے بارے میں قابل اعتماد بنیادی معلومات فراہم کیں۔ چاروں صوبوں اور آزاد جموں و کشمیر میں سروے کے ایک سلسلہ کا انعقاد کیا گیا  جس میں منشیات استعمال کرنے والے 4،533 لوگوں کے انٹرویو کیے گئے،اس سروے کے لیے منشیات کے علاج کے مراکز کے 58 نمائندے؛ 1,198 اہم مخبر؛ اور 51,453 شرکاء کا عام آبادی سے انتخاب کیا گیا تھا۔ مذکورہ سروے سے معلوم ہوا کہ گزشتہ سال اندازاً چھ فیصد آبادی  یا 6.7  ملین لوگوں نے ڈاکٹر کے نسخے میں تجویز کردہ ادویات کے غلط استعمال سمیت کنٹرول شدہ ممنوعہ منشیات کا استعمال بھی کیا۔کولمبو پلان کی زیرقیادت ملک میں منشیات کے عالمی نصاب (UTC) کے عملدرآمد کے ذریعے حاصل کردہ نتائج کی بنیاد پر امریکہ کے بین الاقوامی ادارہ برائے منشیات اور اْمورِ نفاذ قانون (INL) نے اقوام متحدہ کے دفتر برائے انسداد منشیات اور جرائم (UNODC) سے درخواست کی کہ وہ UTC کا عمل CP سے شروع کرے اور آئندہ 24 ماہ میں اس منصوبے کو مکمل کرنے کے لیے ایک تجویز پیش کرے۔ اس لیے یہ تجویز ان عناصر کو پیش کرتی ہے جن پر UNODC غور کرنا ضروری سمجھتا ہے تاکہ وہ پاکستان میں UTC کی سرگرمیوں کے موثر، حقیقت پسند اور بروقت عملدرآمد کو یقینی بنائے۔ مریضوں کے موثر علاج اور بحالی کو مزید بہتر بنانے اور بالآخر پاکستان میں منشیات سے متاثرہ معاشرتی اور معاشی بوجھ کو کم کرنے کے لیے ٹرینرز  کی تربیت کا منصوبہ بنایا گیا تھا جس کا بنیادی مقصد شرکاء کو جدید تربیتی طریقوں اور مراکز کی استعداد کار سے متعارف کروانا تھا۔ لہذا شواہد پر مبنی UTC کے نصاب کو بروئے کار لاتے ہوئے شرکاء  UTC کے نصاب کی مؤثر تربیت فراہم کرنے کے قابل ہوجائیں گے اوراس طرح طلبہ کی تنقیدی سوچ کوفروغ دینے میں مدد مل سکے گی۔ وزارت سائنسی شواہد اور اخلاقیات کے معیارات پر مبنی علاج معالجے کے طریقہ ہائے کار کو مکمل سپورٹ کرتی ہے۔آئی این ایل، امریکی محکمہ خارجہ کی نمائندہ مس لارن می لنگ(انسداد منشیات، رول آف لاء آفیسر) نے کہا کہ اس تربیت کا  فوکس  پاکستان میں یو ٹی سی ٹریننگ سٹرٹیجی پر عمل کرتے ہوئے  شواہد کی بنیاد پر روک تھام اور علاج معالجے کی سہولیات کے حوالے سے صلاحیت سازی کرنا ہے۔

ادویات/ انکشاف

مزید :

صفحہ آخر -