سرکاری حج سکیم کی پالیسی 3سال کیلئے بنانے کی تجویز

سرکاری حج سکیم کی پالیسی 3سال کیلئے بنانے کی تجویز

  

لاہور(میاں اشفاق انجم سے)وزارت مذہبی امور نے حج پالیسی2020ء کی تیاریوں کا آغا کر دیا،سرکاری حج سکیم کی پالیسی3سال کے لیے بنانے کی تجویز دے دی،ملائشین سٹائل پر 3سال کیلئے سرکاری حج سکیم کی رجسٹریشن ایک ساتھ ہو گی،3سال کے عازمین کی قرعہ اندازی بھی ایک ساتھ ہو گی،2020ء میں جانے والے پیکیج کی پوری رقم یکمشت جمع کرائیں گے جبکہ اگلے دو سالوں کیلئے رجسٹریشن کروانے والوں کیلئے 50ہزار سے ڈیڑھ لاکھ تک ٹوکن رقم جمع کرانے کی تجویز،3سالہ پالیسی سے حج پیکیج مہنگا نہیں ہو گا،مکہ،مدینہ میں 3سال کیلئے اچھی عمارتیں حاصل کی جا سکیں گی،کیٹرنگ،ٹرانسپورٹ بہتر حاصل کی جا سکیں گی،ٹوکن کی رقم مخصوص بنک اکاؤنٹ میں جمع ہو گی جس کے منافع سے بھی استفادہ کیا جا سکے گا،حج پالیسی2020ء میں سعودی حکومت نے سرکاری حج سکیم کیلئے روڑ ٹو مکہ کیلئے اسلام آباد،کراچی،لاہور کے لیے گرین سگنل دے دیا ہے،کوئٹہ کیلئے بھی راضی ہیں،پشاور کیلئے اب تک سگنل نہیں مل سکا،روڑ ٹو مکہ صرف سرکاری سکیم کے لیے حجاج کے لیے ہو گا،پرائیویٹ حج سکیم کے حوالے سے فارمولیشن کمیٹی کے اجلاس میں ابھی تک کوئی تجاویز شامل نہیں کی گئی البتہ حج2020ء کے لیے حج کوٹہ کی تقسیم سرکاری سکیم 60فیصد اور پرائیویٹ سکیم40فیصد رکھنے کی تجویز سامنے آئی ہے، نئی3سالہ حج پالیسی کے لیے 3طرح کی مختلف تجاویز سامنے آئیں ہیں،کونسی تجویز قابل عمل ہے،کس سے بہتر متائج حاصل کیے جا سکتے ہیں،حاجی کو کس سے زیادہ سہولیات مل سکیں گی،اس کو فائنل کیا جا سکے گا،مکہ مدینہ کی 3سال کے لیے عمارتوں کے حصول کے لیے بھی فوری طور پر کام شروع کرنے کی تجویز سامنے آئی ہیں،ٹرانسپورٹ اور کیٹرنگ کے لیے اوپن ٹینڈر کے ذریعے کمپنیوں کو موقع دینے کی تجویز ہے، 3سالہ حج پالیسی میں حج2020ء کے لیے سرکاری عازمین کی قرعہ اندازی کے ساتھ ہی حج2021ء اور2022ء کے حجاج کے لیے قرعہ اندازی ہو گی،حج درخواست 2020ء کے لیے مکمل پیکیج کی رقم اور2021ء اور2022ء کیلئے 50ہزار سے ڈیڑھ لاکھ رقم جمع کرانا ہو گی،قرعہ اندازی کے ذریعے 3سال کے حاجیوں کو باقاعدہ اطلاع دی جائے گی کہ آپ کس سال حج کریں گے،نئی3سالہ پالیسی ملائشیاء کی طرز پر بنائی جا رہی ہے،وزار ت کے ذرائع کا کہنا ہے کہ حج فارمولیشن کمیٹی تجاویز دے سکتی ہے،حتمی فیصلہ وفاقی کابینہ ہی کرے گی،کابینہ کی منظورکردہ حج پالیسی ہی فائنل ہو گی۔

حج پالیسی

مزید :

صفحہ آخر -