پنک ربن چھاتی کے کینسر سے آگاہی کی شناختی علامت بن چکا ہے،سو نیا قیصر

پنک ربن چھاتی کے کینسر سے آگاہی کی شناختی علامت بن چکا ہے،سو نیا قیصر

  

لاہور (پ ر) پنک ربن چھاتی کے کینسر سے آگاہی کی شناختی علامت بن چکا ہے جس کا مقصد خواتین کو اس بیماری سے متعلق مکمل آگاہی اور رہنمائی فراہم کرنا ہے، اگر کینسر کی شروع میں تشخیص ہوجائے تو مریض کو ممکنہ حد تک بچایا جاسکتا ہے۔ غیر سرکاری تنظیم وومن امپاورمنٹ کی سو نیا قیصر نے بتا یا کہ بر یسٹ کینسر سے متعلق آگاہی کیلئے کام کرنے والی غیر سرکاری تنظیم وومن امپاورمنٹ کی طرف سے ایک ماہ پر مشتمل ملک گیر پنک ربن مہم کے دوران ملک بھر میں،واک، سیمینارز، اور مختلف تقا ریب کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس کا مقصد عوام بالخصوص خواتین کو مرض کی علامات سے متعلق آگاہی فراہم کرنا اور خواتین کو چھاتی کے سرطان سے بچنے کی مختلف احتیاطی تدابیر سے آگاہ کرنا ہے پاکستان میں ہر سال اکتوبر کو چھاتی کے سرطان سے آگاہی کے طور پر منایا جاتا ہے، انہوں نے بتایا کہ ہماری تنظیم مختلف رفاحی اداروں اور ماہرین صحت کے ساتھ ملکر اس مہم کو کامیاب بنانے کیلئے اقدامات کرتی ہے اور اس دوران خواتین کو مرض کی حساسیت اور اس سے بچاؤ کی احتیاطی تدابیر سے آگاہ کرتی ہے کیونکہ یہ مرض ابتدائی تشخیص پر قابل علاج ہے اس لئے ہچکچاہٹ کی بجائے خواتین کو فوری طور پر اس مرض کا علاج کرانا چاہئے؎

جس سے شرح اموات کو کم کیا جاسکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق رواں سال پوری دنیا میں 1.2 ملین افراد میں چھاتی کے کینسر کی تشخیص ہوئی ہے، گزشتہ سال چھاتی کے کینسر کے نتیجے میں 40 ہزار خواتین موت کے منہ میں چلی گئیں۔ انہوں نے کہا کہ اس ضمن میں 2004ء میں ویمن امپاورمنٹ نے پہلا قدم اٹھایا اور ملک بھر میں چھاتی کے کینسر کے حوالے سے پنک ربن مہم کا آغاز کیا، رواں سال 5 لاکھ خواتین کو پورے ملک میں چھاتی کے کینسر کے حوالے سے آگاہی فراہم کی جاچکی ہے۔ پنک ربن کے تحت ڈاکٹرز نے 14 ہزار خواتین کا فری چیک اپ اور 2 ہزار خواتین کی فری میمو گرام اسکریننگ کی۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -