یہ پاکستانی قبروں سے خواتین کی لاشیں نکال کر اُن کے ساتھ کیا شرمناک کام کرتا تھا؟ جان کر کوئی بھی توبہ کرنے لگے

یہ پاکستانی قبروں سے خواتین کی لاشیں نکال کر اُن کے ساتھ کیا شرمناک کام کرتا ...
یہ پاکستانی قبروں سے خواتین کی لاشیں نکال کر اُن کے ساتھ کیا شرمناک کام کرتا تھا؟ جان کر کوئی بھی توبہ کرنے لگے

  


لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) انسان جب گرنے پر آئے تو ایسا پاتال میں گرتا ہے کہ شیطان بھی شرم سے منہ چھپاتا پھرے۔ اب اس شیطان صفت نوجوان ہی کو دیکھ لے کہ جسے قبرستان میں بھی خدا یاد نہ آیا اور وہ وہاں دفن کی جانے والی متوفی خواتین کی قبریں کھود کر ان کی بے حرمتی کرتا رہا۔ ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق محمد ریاض نامی یہ بدطینت قبرستان کا نگران تھا۔ جب کسی خاتون کو دفن کیا جاتا تو وہ رات کو اپنے ایک دوست کے ساتھ مل کر اس کی قبر کھود ڈالتا اور میت کے ساتھ درندگی کرتا تھا۔

بعد ازاں پولیس نے اس شیطان کو گرفتار کر لیا۔ گرفتاری کے بعد معروف صحافی جیسمین منظور نے اس کا انٹرویو کیا جس میں اس نے اعتراف کیا کہ وہ اب تک 48سے زائد خواتین کی میتوں کی بے حرمتی کر چکا ہے۔ اس نے بتایا کہ وہ قبرستان میں 17سال سے مالی کی نوکری کر رہا تھا اور اس کا کام قبروں کی صفائی کرنا اور پانی چھڑکنا تھا۔ جب کسی لڑکی کی میت دفن کی جاتی تو وہ اپنے ساتھی، جو اسی قبرستان میں گورکن تھا، کے ساتھ مل کر رات کے وقت قبر کھود ڈالتے اور دونوں میت کی بے حرمتی کرتے تھے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس /علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...