عدالت کی نصرت شہباز، رابعہ عمران کو مہلت، سلمان کو اشتہاری قرار دینے کا حکم 

عدالت کی نصرت شہباز، رابعہ عمران کو مہلت، سلمان کو اشتہاری قرار دینے کا حکم 

  

 لاہور(نامہ نگار)احتساب عدالت کے جج جواد الحسن نے شہباز شریف خاندان کیخلاف منی لانڈرنگ ریفرنس کا 4 صفحات پر مشتمل تحریری حکم جاری کردیا۔عدالتی تحریری حکم میں کہا گیاہے کہ واضح ہو چکا کہ سلمان شہباز عدالتی طلبی کے نوٹسز سے چھپ رہے ہیں، سلمان شہباز کی رہائشگاہ کے ریسیپشنٹ نے عدالتی ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری وصول کرنے سے انکار کیا، لندن میں قونصلر اتاشی عبدالحنان کے ذریعے ملزم سلمان شہباز، نصرت شہباز، رابعہ عمران کے ناقابل ضمانت وارنٹ کی تعمیل کروائی گئی۔ شہباز شریف کی اہلیہ نصرت شہباز، بیٹی رابعہ عمران بھی عدالتی احکامات کے باوجود روپوش ہیں۔ رچ بورن کورٹ بلڈنگ کے ریسیپشنسٹ نے ملزموں کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری وصول کرنے سے انکار کر دیا۔ بادی النظر میں لندن میں موجود تعمیل کنندہ ملزم سلمان شہباز، نصرت شہباز، رابعہ عمران کو گرفتار کرنے میں ناکام رہا ہے۔ نصرت شہباز اور رابعہ عمران کے وکیل کی استدعا پر دونوں ملزموں کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی روکی جاتی ہے۔ ضابطہ فوجداری کی دفعہ 87 اور 88 کے تحت سلمان شہباز کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کی جائے۔سلمان شہباز کو اشتہاری قرار دینے کیلئے عوامی مقامات، احاطہ عدالت اور ملزم کے گھر پر اشتہارات آویزاں کئے جائیں۔ ڈی جی نیب لاہور شہزاد سلیم ملزم سلمان شہباز کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی خود مکمل کریں۔ آئندہ سماعت پر ملزم سلمان شہباز کی منقولہ و غیر منقولہ جائیدادوں کا ریکارڈ بھی عدالت میں پیش کیا جائے۔ شہباز شریف کے داماد ہارون یوسف کیخلاف اشتہارات لگانے کے باوجود ملزم عدالت میں پیش نہیں ہوا، ملزم ہارون یوسف بھی جان بوجھ کر قانونی تقاضے پورے کرنے کیلئے عدالت میں پیش نہیں ہو رہا۔ شہباز شریف کے داماد ہارون یوسف کو ایک بار پھر آئندہ سماعت پر پیش ہونے کا موقع دیا جا رہا ہے، اس کیس کی مزید سماعت 13 اکتوبر کوہوگی۔

اشتہاری قرار 

مزید :

صفحہ آخر -