داتا علی ہجویریؒ اسلام کے بہت بڑے مبلغ تھے،قاری زواربہادر

داتا علی ہجویریؒ اسلام کے بہت بڑے مبلغ تھے،قاری زواربہادر

  

 لاہور(پ ر)جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی رہنماء  مفکر اسلام علامہ قاری محمد زوار بہادر نے کہاہے کہ حضرت داتا گنج بخش علی ہجویریؒرسول اللہ ؐ کی اْمت کے ولی کامل،اولیاء اللہ کے سرخیل اوراسلام کے بہت بڑے مبلغ تھے انہوں نے کفرستان ہند میں اسلام کا محبت بھرا پیغام پہنچایا ان کی پْرخلوص جدوجہد سے لاکھوں لوگوں نے اسلام قبول کیا وہ ایک ہزار سال قبل اسلام کا پیغام لے کر لاہور تشریف لائے اور اپنے اخلاق کے ذریعے لوگوں کو دائرہ اسلام میں داخل کیا انہوں نے کہا کہ داتاگنج بخش کے بعد آنے والے اولیا اللہ اور اعلیٰ حضرت امام احمد رضا خان بریلوی نے پاکستان اور دو قومی نظریہ کی بنیاد رکھی۔امام احمد رضا خان بریلوی نے انگریز حکومت اور ہندوسامراج کے خلاف اسلامیانِ ہند کو دوقومی نظریے سے روشناس کروایا۔

 انہوں نے برصغیر پاک وہند کے مسلمانوں کی ایسی رہنمائی کی کہ صرف چند سالوں کی جدوجہد کے بعدپاکستان دنیا کے نقشے پر معرض وجود میں آگیا۔امام احمد رضا ایک سچے عاشق رسول اور مسلمانوں کے عظیم محسن تھے۔انہوں نے مسلمانوں کے دلوں میں عشق رسول? کا ایسا چراغ روشن کیا جس کی روشنی آج برصغیر پاک و ہند میں بلخصوص اور پوری دنیا میں با لعموم دکھائی دے رہی ہے۔انہو ں نے کہا کہ اعلیٰ حضرت امام احمد رضا کو اللہ تعالیٰ نے علم ا لدنی سے نوازا تھا انہوں نے مسلمانوں کے لئے آنے والی مشکلات کو کئی دھائیوں پہلے محسوس کرتے ہوئے مسلمانوں کو ایک علیحدہ سلامی ریاست کے لئے جدوجہد کی راہ دکھائی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعیت علماء پاکستان کے زیر اہتمام جامعہ صفۃالاسلامیہ سوئے آصل میں ”داتا گنج بخش“ کے عرس کے سلسلے میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا پروفیسر عابد رفیق،رشید احمد رضوی اور دیگر نے بھی خطا ب کیا۔ مقررین نے کہا کہ اعلی حضرت نے مرزا قادیانی اور گستا خان رسول?کے خلاف بھر پور علمی وعملی محاسبہ کیا انہوں نے ہزاروں صفحات پر مشتمل فتاوی رضویہ سمیت دیگر ہزاروں کتابیں تصنیف فرمائیں جن کے ذریعے بر صغیر کے مسلمانوں کے دلوں میں عظمت اور محبت رسول? کے چراغ روشن کیے۔وہ اسلام کے سچے مبلغ اور گستاخان رسول کے خلاف ننگی تلوار تھے۔

جاری کردہ

 انچارج میڈیا سیل

جمعیت علماء پاکستان

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -