پولیس اہلکاروں کا سائلین پر تشدد،ویڈیو منظرعام پر آگئی

 پولیس اہلکاروں کا سائلین پر تشدد،ویڈیو منظرعام پر آگئی

  

 لاہور(کرائم رپورٹر) سی سی پی او عمرشیخ کے کوشش کے باوجود پولیس اہلکاروں کا قبیلہ درست نہ ہو سکا ضلع کچہری کے گیٹ پر پولیس اہلکاروں نے عدالت لگا لی ویڈیو منظر عام پر آگئی کیس کے سلسلے میں آئے سائلین پر تشدد، پولیس اہلکاروں نے خاتون کو تشدد کا نشانہ بنا یا اور بازوو ں سے کھنچ کر اسلحہ سر پر تان کر گولی مارنے کی دھمکیا ں دیتے رہیں سی سی پی او کا واقعہ کی انکوائری کا حکم تفصیلات کے مطابق لاہور ضلع کچہری کے باہر پسند کی شادی کرنے والی لڑکی رمشہ کے ورثاء کوپولیس اہلکاروں نے بدترین تشدد کا نشانہ بنا ڈالا اور خواتین کو بازوں سے پکڑ کر ان پر اسلحہ تان لیا اور بعد ازاں انہیں گھسیٹتے ہوئے ساتھ لے گئے ذرائع کے مطابق رمشہ نے پسند کی شادی کی 164 کا بیان ریکارڈ کرانے عدالت پہنچی تھی ر رمشہ نے جوڈیشل مجسٹریٹ عمر فاروق کی عدالت میں بیان قلمبند کرانا تھا لاہور پولیس نے رمشہ کو ساتھ لیجانے پر رمشہ کے ورثاء پر تشدد کیا اس حوالے سے ایس ایس پی آپریشنز فیصل شہزاد کا کہنا تھا کہ پسند کی شادی کرنے والی لڑکی کے بھائیوں نے اس پر حملہ کیا اور اسے ساتھ لے جانے کی کوشش کی لڑکی کے بھائیوں کی پولیس اہلکاروں نے مشکل سے جان چھڑائی دوسری جانب سی سی پی او لاہور کا ضلع کچہری کے باہر سائلین سے مبینہ تشدد کے معاملے پر نوٹس لیتے ہوئے ایس پی سٹی تصور اقبال سے واقعہ کی رپورٹ طلب کر لی۔

مزید :

علاقائی -