کاٹن کراپ کی بحالی کیلئے سٹیک ہولڈرز کردار اداکریں، ڈاکٹر جسومل 

کاٹن کراپ کی بحالی کیلئے سٹیک ہولڈرز کردار اداکریں، ڈاکٹر جسومل 

  

 ملتان (نیوز رپورٹر) پاکستان کاٹن جنرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین ڈاکٹرجسومل نے سینئر وائس چیئرمین ملک طفیل احمد کے ہمراہ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھنے والی وائیٹ گولڈ(کپاس)کے کراپ سائز میں شدید کمی سے معیشت تباہی کی طرف گامزن ہے۔پاکستان کی کثیر دیہاتی آبادی کا روزگارصرف وصرف کپاس(بقیہ نمبر3صفحہ6پر)

 کی فصل سے وابستہ ہے جس میں مسلسل کمی روزگار کے مسائل میں اضافہ کا باعث بن رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ کاٹن کا عالمی دن آج لاہور میں منایا جا رہا ہے جس میں کاٹن کراپ کے سائز میں اضافہ اور کاٹن کی اہمیت کے متعلق آگاہی دی جائے گی جو کہ خوش آئند ہے اور پی سی جی اے اس موقع پر بھرپور شرکت کرے گی۔ انہوں نے کہا کہ پاکستانی حکومت اور پاکستان سے متعلقہ تمام سٹیک ہولڈرز کپاس کی فصل کو دوبارہ 15ملین بیلز تک لانے میں اپنا بھر پور کردار اادا کریں اور کاٹن کی کوالٹی کو انٹر نیشنل لیول کے مطابق بنانے میں وسائل کا استعمال کریں۔انہوں نے کہا کہ دنیا نے ٹیکنالوجی کو استعمال کر تے ہوئے اپنی فصل میں اضافہ اور معیشت کو مضبوط کیا ہے اور ہمیں بھی کاٹن پروڈکشن میں اضافہ کے لیے جدید ٹیکنالوجی کے استعمال اور گروورز کو تعلیم وآگاہی دینا ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ پی سی جی اے کاٹن کراپ میں بحالی کے لیے حکومتی سطح پر تمام متعلقہ وزارتوں و اداروں کو ہنگامی بنیادوں پر توجہ دلوائے گی اور ہر فورم پر ان کی معیشت میں کاٹن کی اہمیت کو اجاگر کرے گی تاکہ مطلوبہ کاٹن کراپ کا ہدف اور اچھی کوالٹی کا حصول ممکن ہو سکے۔ملک طفیل احمد نے کہا کہ کاٹن کراپ سائز میں اضافہ اور کوالٹی میں بہتری ہی خوشحالی کا ضامن ہے اور ملک کی کثیر آبادی جو کاٹن و کاٹن الائیڈ انڈسٹری سے منسلک ہے اس کی بدحالی کو کاٹن کراپ پر ترجیحی بنیادوں پر توجہ دے کر حل کیا جاسکتا ہے۔تمام سٹیک ہولڈرز اور حکومتی ادارے اپنی ذمہ داریوں کااحساس کرتے ہوئے کاٹن کی بحالی کے لیے شب و روز اپنا کردار ادا کریں۔

کاٹن

مزید :

ملتان صفحہ آخر -