پیپلز پارٹی نے18 اکتوبر کو  باغ جناح کراچی میں بھرپور" طاقت شو " کرنے کا اعلان کردیا 

پیپلز پارٹی نے18 اکتوبر کو  باغ جناح کراچی میں بھرپور" طاقت شو " کرنے کا اعلان ...
پیپلز پارٹی نے18 اکتوبر کو  باغ جناح کراچی میں بھرپور

  

کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان پیپلز پارٹی نے18 اکتوبر کو پی ڈی ایم کے تحت باغ جناح کراچی میں ایک بڑا جلسہ عام کرنے اور بھرپور طاقت کا مظاھرہ کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ اپوزیشن قیادت کے خلاف کتنا بھی سیاسی انتقام لیا جائے مگر عوام کے حقوق کیلئے اب اٹھنے والے اس آواز کو نہیں دبایا جاسکتا،وفاقی حکومت نے صدارتی آرڈیننس کے تحت آئی لینڈ اتھارٹی قائم کرکے آئین سے تجاوز کیا، جزیروں سے متعلق غیر آئینی صدارتی آرڈینس کو فی الفور واپس لیا جائے ۔

تفصیلات کے مطابق پیپلز پارٹی کی ایگزیکٹو کمیٹی کے اجلاس کے بعد بریفنگ دیتے پی پی  سندھ کے صدر نثار کھوڑو نے کہا کہ 18 اکتوبر کو پیپلز پارٹی کی میزبانی میں باغ جناح میں  ہونے والے پی ڈی ایم کے جلسہ عام میں بھرپور طاقت کا مظاھرہ  کیا جائے گا ،جلسہ عام میں  پیپلز پارٹی کےکارکنان اور عوام بھرپور شرکت کریں گے۔ پیپلز پارٹی سندھ کے اجلاس میں قراردیں منظور کرتے ہوئے کہا گیا کے آج کا یہ اجلاس جزیروں سے متعلق صدارتی آرڈیننس کو مسترد کرتا ہے اور وفاق سے مطالبہ کرتا ہے کہ جزیروں سے متعلق غیر آئینی صدارتی آرڈینس کو فی الفور واپس لیا جائے۔یہ اجلاس سمجھتا ہے کہ آئین پاکستان کے آرٹیکل 172 کے تحت یہ جزائر سندھ کی ملکیت ہیں اور وفاقی حکومت نے صدارتی آرڈیننس کے تحت آئی لینڈ اتھارٹی قائم کرکے آئین سے تجاوز کیا ہے، وفاق کا یہ عمل سندھ کی زمین پر قبضہ اور ڈاکہ ہے،پاکستان پیپلز پارٹی صوبوں کے حقوق کی ضامن ہے اور سلیکٹڈ وفاقی حکومت کو صوبوں کے حقوق کسی صورت نہیں چھیننے نہیں دیں گے۔

 یہ اجلاس سابق صدر آصف علی زرداری، فریال تالپور، یوسف رضا گیلانی، سید خورشید شاہ، سید قائم علی شاہ، نثار کھوڑو سمیت پاکستان پیپلز پارٹی کے دیگر رہنماؤں سمیت اپوزیشن کی دیگر سیاسی قیادت کے خلاف نیب کی انکوائریاں، جھوٹے اور  غداری کے مقدمات سمیت نیب نیازی گٹھ جوڑ کے تحت ہونے والی انتقامی کاروائیوں کو جمہوریت کو کمزور اور سیاسی دباؤ تصور کرتا ہے اور اس عمل کی شدید مذمت کرتا ہے، وفاق کو انتباہ کیا جاتا ہے کہ اپوزیشن کی سیاسی قیادت کے خلاف کتنا بھی سیاسی انتقام کیا جائے مگر عوام کے حقوق کیلئے اب اٹھنے والی اس آواز کو نہیں دبایا جاسکتا۔

پیپلز پارٹی کے اجلاس میں کہا گیا کے  یہ اجلاس سندھ میں بجلی اور گیس کی طویل لوڈشیڈنگ پر تشویش کا اظہار کرتا ہے کہ مطالبہ کرتا ہے کہ آئین کے تحت جس صوبے سے  گیس نکلتا ہے اس صوبے کی پہلے ضروریات پوری کی جائیں،سندھ سے گیس اور بجلی کی طویل لوڈ شیڈنگ کا خاتمہ کیا جائے۔ سندھ میں بارشوں سے ہونے والی تباہیوں سے 25 لاکھ سے زائد بے گھر ہونے والے شہریوں کی مشکلات پر وفاقی حکومت کی خاموشی قابل مذمت عمل ہے اور وفاقی حکومت کا یہ عمل سندھ سے  سوتیلی ماں جیسا رویہ تصور کرتا ہے اور مطالبہ کرتا ہے کہ بارش کی تباہ کاریوں کی وجہ سے سندھ کے لاکھوں متاثرین کی وفاقی حکومت فوری امداد کا اعلان کرے۔اجلاس میں مزید کہا گیا کے یہ اجلاس ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی کے طوفان کو عوام دشمنی سمجھتا ہے اور موجودہ حکمرانوں کی اس عوام دشمن پالیسیوں کی مذمت کرتا ہے۔ یہ اجلاس وفاق سے مطالبہ کرتا ہے کہ ادویات، اشیاء  خوردنوش سمیت گئس، بجلی ا ور پیٹرول کی بڑھائی گئی قیمتوں کو فی الفور واپس لیا جائے۔  یہ  اجلاس سمجھتا ہے کہ وفاقی حکومت عوام کو ریلیف دینے سمیت ہر محاظ پر مکمل طور پر ناکام ثابت ہوئی ہے اس لئے یہ اجلاس مطالبہ کرتا ہے کہ سلیکٹڈ وزیراعظم فوری طور پر اپنے عہدے سے استعفی دیں۔

مزید :

علاقائی -سندھ -کراچی -