ویمن یونیورسٹی ملتان، اساتذہ کو نظر انداز کرنے پر انتظامیہ کو نوٹس

ویمن یونیورسٹی ملتان، اساتذہ کو نظر انداز کرنے پر انتظامیہ کو نوٹس

  

 ملتان (خصو صی رپورٹر) لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ کے جج مسٹر جسٹس (بقیہ نمبر61صفحہ7پر)

احمد ندیم ارشد نے وومن یونیورسٹی ملتان میں 8 سال سے بطور لیکچر فرائض انجام دینے والی خواتین اساتذہ کو مبینہ طور پر نظرانداز کرتے ہوئے اپنی پسند کے امیدواروں کو تعینات کرنے کے لیے اخبارات میں اشتہار دینے کے خلاف درخواست پر یونیورسٹی انتظامیہ کو نوٹس جاری کر دیا ہے۔ قبل ازیں عدالت عالیہ میں پیٹشنرز سحرش ناز، اقصی جمیل، افشاں الماس نے کونسل شیخ جمشید حیات  کے ذریعے درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا تھا کہ انکو وومن یونیورسٹی ملتان میں کنٹریکٹ کی بنیاد پر آئی ٹی کمپیوٹر سائنس ٹیچر بھرتی کیا گیا ان کی تقرری سینڈیکیٹ کی منظوری اور سلیکشن بورڈ کی سفارش پر ہوئی تھی وہ اٹھارویں سکیل پر 2013 سے کام کر رہی ہیں اور ان کے خلاف کوئی شکایت نہیں ہے مگر یونیورسٹی انتظامیہ نے ڈیپارٹمنٹ میں تقرریوں کے لیے اشتہار دے دیا ہے جو کہ ضابطہ قانون کے خلاف اور پہلے سے کام کرنے والی خواتین اساتذہ کے ساتھ زیادتی ہے۔

نوٹس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -