داعش میں شمولیت کی کوشش کرتا نوجوان گرفتار، تعلق کس مذہب اور ملک سے تھا؟ جان کر آپ کیلئے بھی یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

داعش میں شمولیت کی کوشش کرتا نوجوان گرفتار، تعلق کس مذہب اور ملک سے تھا؟ جان ...
داعش میں شمولیت کی کوشش کرتا نوجوان گرفتار، تعلق کس مذہب اور ملک سے تھا؟ جان کر آپ کیلئے بھی یقین کرنا مشکل ہوجائے گا

  


یروشلم(مانیٹرنگ ڈیسک) چند ماہ قبل ایک خبر آئی تھی کہ ایک یہودی لڑکی نے شام پہنچ کر داعش کو جوائن کر لیا ہے لیکن اس لڑکی کا تعلق فرانس سے تھا مگر اب ایک اسرائیلی یہودی نوجوان کے داعش میں شامل ہونے کے لیے گھر سے فرار ہونے کی خبر بھی آ گئی ہے۔ ایک ہفتہ قبل روز اسرائیلی وزارت خارجہ سے ایک خاندان کی طرف سے ہنگامی طور پر رابطہ کیا گیا۔ وزارت کے حکام کو والدین نے بتایا کہ ان کا بیٹا داعش میں شامل ہونے کے لیے اسرائیل سے یونان کے جزیرے ’’کریٹ‘‘ کے لیے روانہ ہو چکا ہے۔

مزید پڑھیں:داعش میں شمولیت اختیار کرنے والی نوجوان لڑکیوں کو کیا اشیاء ساتھ لانے کی ہدایات دی جاتی ہیں؟ناقابل یقین انکشافات

اس اطلاع پر اسرائیلی وزارت خارجہ فوری طور پر حرکت میں آئی اور جب اس کے حکام یونانی جزیرے کریٹ پر پہنچے تو پتا چلا کہ وہ یہودی نوجوان کریٹ سے ترکی کی فلائٹ پکڑ چکا تھا۔ جس سے انہیں یقین ہو گیا کہ نوجوان واقعی داعش میں شامل ہونے کے لیے شام جا رہا ہے۔ ترکی پہنچی کر وہ نوجوان بارڈر عبور کرکے شام میں داخل ہو جائے گا۔اس پر وزارت خارجہ نے انٹرپول کے ذریعے ترکی کے شہراستنبول اور انقرہ میں اپنے سفارت خانوں سے رابطہ کیا اور انہیں ترک حکام کے ساتھ مل کر نوجوان کو شناخت کرنے اور گرفتار کرکے واپس اسرائیل بھیجنے کا حکم دیا۔

بالآخر نوجوان کو ترکی اور شام کے بارڈر کے قریب سے حراست میں لے لیا گیا اور چند روز قبل اسے اسرائیل واپس پہنچا دیا گیا ۔اسرائیلی ٹی وی چینل 2کے مطابق اس نوجوان کے خلاف مقدمہ چلایا جارہا ہے اور اسے اس کے عمل کی سزا دی جائے گی۔ واضح رہے کہ اس سے قبل بھی کئی افراد کو داعش میں شمولیت کی کوشش کرنے پر اسرائیلی عدالتوں سے قید کی سزائیں دی جا چکی ہیں لیکن ان سب کا تعلق فلسطین کی مسلمان آبادی سے تھا۔

مزید : بین الاقوامی


loading...