اتوار بازاروں کی ناقص کارکردگی صارفین کئی مسائل سے دو چار،نوٹس کا مطالبہ

اتوار بازاروں کی ناقص کارکردگی صارفین کئی مسائل سے دو چار،نوٹس کا مطالبہ

لاہور ( کامرس رپورٹر)پنجا ب حکو مت کی جانب سے شہریو ں کو عام مارکیٹ کی نسبت ارزاں نر خو ں پر سبز یو ں و پھلو ں کی فراہمی کے لیے قائم کیے جانے والے اتوار بازارضلعی حکو مت کی عد م تو جہی کے باعث صارفین کے لیے کئی ایک مسائل سے دوچار ہیں جس کے لیے ڈی سی او لاہور تو جہ دینے کی ضرورت ہے۔ صو بائی دارالحکو مت میں سب سے بڑا اتوار بازار عزیز بھٹی ٹاؤن کے زیر اہتما م تاجپورہ میں لگا یا جاتا ہے ۔ جہاں پر سبزیو ں و پھلوں سمیت ضروریا ت زندگی کی دیگر اشیاء کے سینکڑو ں سٹالز لگائے جاتے ہیں اور گر دو نواح کے در جنو ں علا قو ں کے ہزاروں پسماندہ و مڈ ل کلاس طبقہ کے افراد خر یداری کر نے کے لیے رخ کر تے ہیں ۔روزنا مہ پا کستان کی جانب سے گزشتہ روزکیے گئے تاجپورہ اتوار بازار سروے میں صارفین نے اتواربازار کے انتظا مات کو بہتر قرار دیتے ہو ئے مہنگائی کا رونا رویا اور گندگی سمیت سیکیورٹی صو رتحا ل کو بہتر بنا نے پر زور دیا۔شہریوں نے خا دم اعلی پنجا ب کا سہرا سجانے والی حکو مت سے مطا لبہ کیا کہ عوام کو حقیقی ریلیف کی فراہمی کے لیے مہنگائی کے جن کو بو تل میں بند کرنے کے لیے سنجید گی کا مظا ہرہ کرے کیو نکہ مہنگائی کے طو فان نے متو سط طبقہ کو چھو ٹی چھو ٹی خو شیو ں سے محروم کر دیا ہے ۔صارفین ماریہ ، بندیا ، مسز عمران اور مسز علی نے کہاکہ ملک میں جاری مہنگائی کی لہر نے سستے اتوار بازاروں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے ۔ یہاں پر سیکیورٹی کے انتظامات کو بہتر بنانے کی ضرورت ہے ۔ثمینہ اور سا جدہ نے کہا کہ یہاں پر تمام اشیاء اوپن مارکیٹ کی نسبت سستی مل رہی ہیں تاہم کوالٹی کو بہتر بنانے کی ضرورت ہے۔انھو ں نے کہا کہ مہنگائی کو کنٹرول کرنے کے لیے اقدامات کو ضرورت ہے۔عابد مغل ،ماما امین، طارق ناگی ،صاباں نے کہا کہ مہنگائی نے زندگی اجیرن بنا دی ہے۔غریب چھو ٹی چھوٹی خوشیو ں سے محروم ہو چکے ہیں۔انھو ں نے کہاکہ پسماندہ علاقہ ہو نے کے باو جو د انتظامیہ ہر ممکن ریلیف فراہم کر رہے ہیں۔مسز حنیف نے کہا کہ عام مارکیٹ اور اتوار بازار میں فروخت ہو نے والی سبزیو ں و پھلو ں کی قیمتیں یکساں ہیں۔انھو ں نے کہا کہ اتوار بازار کی حالت زار تو بہتر ہے تاہم خواتین کو مسائل کا سامنا ہے جس کے لیے ٹاؤن انتظا میہ کو اپنا کر دار ادا کرنا چائیے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1


loading...