مقبوضہ کشمیر: بھارتی فوج کے ہاتھوں 2افراد کی شہادت کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

مقبوضہ کشمیر: بھارتی فوج کے ہاتھوں 2افراد کی شہادت کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

سری نگر ( اے این این ) مقبوضہ کشمیر کے علاقے رتنی پورہ میں بھارتی فوج کے ہاتھوں دو افراد کی شہادت کے خلاف احتجاجی مظاہرہ ٗ بی ایس ایف اہلکاروں کا مظاہرین پر وحشیانہ تشدد ٗ فائرنگ اور لاٹھی چارج سے ایک نوجوان جاں بحق ٗ درجنوں زخمی ہوگئے ٗ مشتعل نوجوانوں کا فوجی گاڑیوں پر پتھراؤ ٗ کئی گاڑیاں تباہ ٗ کرناہ میں مسافر وین نالہ بہک میں گرنے سے5 افراد جاں بحق ٗ لاشیں نہ مل سکیں ٗ تلاش شروع ۔ تفصیلات کے مطابق اونتی پورہ میں بی ایس ایف اہلکاروں نے دو افراد کی شہادت کے خلاف احتجاج کرنے والے مظاہرین پر فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک جوان سال نوجوان جاں بحق ہوگیا ۔رتنی پورہ علاقے میں تصادم کے بعد یہ خبر پھیلی کہ بھارتی فوج کے ہاتھوں شہید ہونے والے دو افراد پد گام پورہ کے رہائشی ہیں اس کے بعد ملنگ پورہ میں مقامی لوگوں نے سڑکوں پر نکل کرزبردست احتجاج کیا۔ اسی دوران وہاں سے بی ایس ایف کی ایک گاڑی جا رہی تھی تو احتجاجیوں نے گاڑی دیکھتے ہی اس پر پتھراؤ کیا اور اس پر لاٹھیوں سے حملہ کرنے لگے۔ اس دوران گاڑی میں موجود اہلکاروں نے گولیاں چلائیں جس سے ایک مقامی نوجوان بلال احمد بٹ شدید زخمی ہوا۔ اسے فوری طور اونتی پورہ اسپتال پہنچایا گیا جہاں سے اسے ایس ایم ایچ ایس اسپتال سرینگر لے جایا گیا۔ لیکن وہاں ڈاکٹروں کے مطابق اس کی راستہ میں ہی موت واقعہ ہوئی تھی واقعہ کے بعد پورے علاقے کے لوگ مشتعل ہوئے اور وہ زبر دست احتجاج کرنے لگے بلال احمد بٹ اپنے گھر کا واحد کمانے والا تھا اس کے گھر میں اس کے دو چھوٹے بھائی اور والدین ہیں۔اس ضمن میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے آئی جی کشمیر جاوید گیلانی نے کہا کہ انہیں بی ایس ایف سے معلوم ہوا کہ احتجاج کرنے والوں میں سے ان پر کسی نے گولیاں چلائیں جس کے جواب میں انہوں نے بھی فائر کھولا۔ جس سے ایک شخص زخمی ہوا جس کی بعد میں موت ہوئی۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اس ضمن میں تفتیش شروع کی گئی ہے۔ دوسری جانب گھنڈی گجراہ کرناہ سے بہک کی طرف جا رہی ایک سومو گاڑیوں کو اس وقت نستہ چھن گلی کے قریب حادثہ پیش آیا جب وہ ڈرائیور کے قابو سے باہر ہو کر خونی نالہ میں جا گہری جس کے نتیجے میں موقعہ پر ہی ڈرائیور سمیت 5افراد لقمہ اجل بن گے جن میں سے ابھی تک صرف ڈرائیور کی ہی شناخت ہو سکی ہے۔مرنے والے تمام افراد کا تعلق کھنڈی گجراہ ، کھنڈی سیدہاں ، اور درگڑ علاقے سے ہے ۔اس دوران معلوم ہوا ہے مرنے والوں میں ایک ہی گھر کے چار افراد شامل ہیں ۔ منگل کو شام ساڑھے پانچ بجے کے قریب ایک سومو ٹاٹاگھنڈی گجراہ سے سواریوں کو لیکر بہکوں میں جا رہی تھی تو اس دوران سادھنا گلی کے نزدیک پہنچ کر یہ گاڑی ڈرائیور کے قابو سے باہر ہو کر خونی نالے میں جا گری جس کے وجہ سے2خواتین ،ایک لڑکی، 1بچے اور 6مرد موقعہ پر ہی لقمہ اجل بن گئے ۔مرنے والے ڈرئیور کی شناحت شہباز احمد کے بطور ہوئی ہے اور باقی افراد کی شناخت نہیں ہو سکی ۔

مزید : عالمی منظر


loading...