مناواں ،گھریلو نا چاقی سسرالیوں نے دو بچوں کی ماں زندہ جلا ڈالی

مناواں ،گھریلو نا چاقی سسرالیوں نے دو بچوں کی ماں زندہ جلا ڈالی

 لاہور(کرائم سیل)مناواں میں گھریلو ناچاقی پرسسرالیوں نے دو بچوں کی ماں کو زندہ جلا کر مار ڈالا۔بتایا گیا ہے کو دھوبی گھاٹ کے رہائشی محمد رزاق نے اپنی بیٹی سنبل کی شادی 2008میں جلال پارک مناواں کے رہائشی سجاد علی سے کی جس سے دو بچے پیدا ہوئے، اس دوران دونوں میں لڑائی جھگڑے شروع ہو گئے ۔جس پر سنبل میکے چلی گئی اور عدالت میں خلع اور بچوں کے خرچہ کا دعوی کر دیا ۔عدالت نے پیش نہ ہونے پر سجاد علی کو ڈیڑھ سال قید اور ایک لاکھ جرمانے کا حکم سنا دیا ۔ سجاد نے سزا سننے کے بعد بیوی کی منت سماجت کر کے اسے صلح پر راضی کر لیا اور گھر لے گیا ۔ چند روز گزرنے کے بعد سجاد نے اپنے بڑے بھائیوں الیاس اور نواز کے ساتھ ملکر سنبل پر مٹی کا تیل ڈال کر اسے آگ لگا دی ۔جس سے سنبل بری طرح جھلس گئی، سجاد نے سنبل کو میو ہسپتال داخل کروا کراگلے روز اس کے گھر والوں کو اطلاع دی،کہ سنبل گھر میں کھانا بناتے ہوئے آگ لگنے سے جھلس گئی ہے۔سنبل کے والدین اور بھائی اطلاع ملتے ہی ہسپتال پہنچے تو سنبل بری طرح جھلسی ہوئی تھی۔سنبل کے گھر والوں نے اس سے بات کی تو سنبل نے اپنے گھر والوں کے سامنے شوہر کا بھانڈا پھوڑ دیا اور کہا کہ اسے سجاد اور اسکے بھائیوں الیاس اور نوازنے آگ لگائی ہے۔ سنبل گھر والوں کی موجودگی میں ہی ہسپتال میں دم توڑ گئی۔پولیس نے سنبل کے والد کی رپورٹ پر سجاد اور اس کے بھائیوں الیاس اور نواز کیخلاف قتل کا مقدمہ درج کر کے کارروائی شروع کر دی ۔ مقدمہ کے مدعی سنبل کے والد محمد رزاق نے کہا کہ سجاد اور اسکے بھائبوں الیاس اور نواز نے میری بیٹی کا ناحق قتل کیا ہے، ملزموں کو گرفتار کر کے سزائے موت دی جائے تا کہ آئندہ کوئی کسی کی بیٹی کو قتل کرنے کی جرات نہ کرے۔انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف، آئی جی پنجاب مشتاق سکھیرا اور سی سی پی او لاہور کیپٹن(ر) امین وینس سے ملزموں کو نشان عبرت بنانے کا مطالبہ کیا ہے۔

مزید : علاقائی


loading...