گوجرانوالہ‘کمرشلائزیشن فیسیں ہڑپ کر نے پر 130سے زائد عمارتیں سیل

گوجرانوالہ‘کمرشلائزیشن فیسیں ہڑپ کر نے پر 130سے زائد عمارتیں سیل

گوجرانوالہ (بیورورپورٹ )شہر اور اسکے گردو نواح میں حکومتی عائد کردہ کروڑوں روپے مالیت کی کمرشلائزیشن فیسیں ہڑپ کر نے اور عدم ادائیگی پر سرکاری سیل کی زد میں آنے والی عمارتوں کی تعداد 130سے تجاوز کر گئی ہے اور ان میں کئی سیاسی شخصیات بااثر تاجر ، صنعتکار ، سرکاری ملازمین اور ڈویویلپرز کی ملکیتی جائیدادیں بھی شامل ہیں جبکہ نئے ڈی سی او کے چارج سنبھالنے کے بعد ایسی غیر قانونی تعمیر ات کے خلا ف کاروائیاں پہلے سے کہیں زیادہ تیزدکھائی دے رہی ہیں اور پچھلے چند یوم میں 2درجن سے زائد میرج ہال ، فیکٹریوں ، ورکشاپوں اور ہوٹل وغیرہ کی زیر تعمیر بلڈنگز کو کمرشل فیسیں سرکاری خزانے میں جمع نہ کروانے پر سیل کر کے مالکان کو فائنل نوٹس بھی جاری کر دیے گئے ہیں اور یہ ایکشن ڈسٹرکٹ آفیسر اسپیشل پلاننگ محمد نعمان رضا کی ہدایت پر سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ کے دفتر کے بلڈنگز انسپکٹر محمد حفیظ بٹ، نجیب خان اور دیگر افسران و سٹاف پر مشتمل عملے نے دوران چیکنگ کیاجبکہ بعض شاطر بلڈنگز مالکان نے پچھلے سال کو کمرشلائزیشن فیس کے جاری کردہ ووچرز سلپیں محکمے کی ٹیموں کو دکھا کر دھوکہ دہی کا مظاہرہ بھی کیا جس پر انکا تعمیراتی سامان بھی قبضے میں لے لیا گیا ہے اور اب تک سٹی ڈسٹرکٹ گورنمنٹ نے نادہندگی و سینہ زوری اور عدم کمرشلائزیشن فیسیں پر 130سے زائد بلڈنگز و عمارات کو سیل کیا ہے جن عمارات کے خلاف حال ہی میں کاروائی کی گئی ہے ان میں فاروق دھاگہ فیکٹری ،امین سٹیل ورکس ،ڈی ایچ اے مکی ایسوسی ایٹس ،المرحبا بیکری ، عالم چوک میں میرج ہال ، کھیالی چوک ، شالیمار ماربلز اور دیگر کئی شامل ہیں تاہم ڈسٹرکٹ آفیسر اسپیشل پلاننگ کے دفتر نے مذکورہ کاروائیوں کی تصدیق کی ہے ۔

مزید : علاقائی


loading...