نویں جماعت کے امتحانی نتائج کی تیاری میں دانستہ غفلت اور پیسہ کمانے کی دوڑ کا انکشاف

نویں جماعت کے امتحانی نتائج کی تیاری میں دانستہ غفلت اور پیسہ کمانے کی دوڑ کا ...

لاہور(لیاقت کھرل )سیکنڈری بورڈ لاہوکے زیر اہتمام نویں جماعت کے امتحانی نتائج کی تیاری میں ایگزامینرز ،ہیڈ ایگزامینرز،سکریسی آفیسرز اورچیف سکریسی آفیسرکی بڑے پیمانے پر دانستہ غفلت اورپیسہ کمانے کی دوڑ کا انکشاف سامنے آیا ہے۔چئیرمین سیکنڈری بورڈ محمد نصراللہ ورک نے سخت نوٹس لے لیا، سیکرٹری ہائر ایجوکیشن کمیشن نے بھی برہمی کا اظہار کیا۔دوسو سے زائد ایگزامینرز ،ہیڈ ایگزامینرز اورسکریسی افسروں کے خلاف کاروائی۔تفصیلات کے مطابق سیکنڈری بورڈ لاہور کے زیر اہتمام نویں جماعت کے امتحانی نتائج کی تیاری میں ایگزامینرز اورسکریسی افسران سمیت ہیڈ ایگزامینر زنے پرچوں کی چیکنگ کی بجائے پیسہ کمانے کی دوڑ شروع کردی ہے۔جس میں نویں جماعت کے تیار ہونے والے رزلٹ میں پیپر چیکروں کی بڑے پیمانے پر دانستہ غفلت سامنے آنے پر اس بات کا انکشاف ہوا ہے۔چئیر مین سیکنڈری بورڈ محمد نصراللہ ورک پیپروں کی ری چیکنگ کی شکایا ت کے انبار لگ جانے پر خود حرکت میں آگئے اورامتحانی نتائج تیار کرنے والے ایگزامینرز ،ہیڈ ایگزامینرزاورچیف سکریسی افسروں پر برس پڑے۔کنٹرولر امتحانات انورفاروق کی رپورٹ پر دوسو سے زائد پیپر چیکروں کے واجبات روکنے کا حکم دے دیا اوران کے خلاف ایجوکیشن بورڈ کے ضابطہ کے تحت تادیبی کاروائی کا حکم دے دیا۔یاد رہے کہ نویں جماعت کے امتحانی نتائج کی تیاری میں زیادہ تر امیدوارشکایت لے کر ایجوکیشن بورڈ پہنچ گئے۔جس میں زیادہ تر امیدواروں کا الزام تھا کہ ان کے پرچوں کی چیکنگ کے دوران دانستہ غفلت سے کام لیا گیا ہے اوراس کے ساتھ پیپروں کے نمبر لگانے کے دوران نمبروں کی کاؤنٹنگ کرتے وقت بھی دانستہ غفلت سے کام لیا گیا ہے اوراس میں ری کاؤنٹنگ اورسپر چیکنگ کیلئے معمور ٹیموں نے بھی دانستہ غفلت اورپیسے بڑھانے کی دوڑ میں لگے رہے ہیں۔جس کے باعث ری چیکنگ کی شکایات زیادہ ریکارڈ کی گئی ہیں۔دوسری جانب لاہوربورڈ نے نویں جماعت کے پرچوں کی مارکنگ کے دوران کم نمبروں کی شکایت کے حوالے سے دوہزارسے زائد امیدواروں کی ری چیکنگ کے عمل کو مکمل کر لیا ہے۔نویں جماعت کے پرچوں کی ری چیکنگ کے دوران زیادہ تر امیدواروں کی شکایات درست پائی گئی ہیں۔لاہوربورڈ نے گزشتہ دوہفتوں سے نویں جماعت کے پیپروں کی ری چیکنگ کا سلسلہ شروع کر رکھا تھا جو کہ گزشتہ روز اتوار کی چھٹی کے دن جاری رہا۔لاہور بورڈ کے ذرائع کے مطابق نویں جماعت کے پیپروں کی ری چیکنگ کیلئے دوہزار سے زائد طلبا وطالبات نے رجوع کیا۔جس میں ساڑھے پانچ سو سے زائد طلبا وطالبات کی شکایات درست ثابت ہوئیں۔جبکہ باقی امیدواروں کے پیپروں کی مارکنگ میں کسی قسم کی کوئی غلطی نہ پائی گئی۔اس میں لاہوربورڈ میں دوسو سے زائد امیدواروں کو روزانہ کی بنیاد پر پیپروں کی ری چیکنگ کیلئے بلایا جاتا۔جس میں پچیس سے تیس امیدواروں کے پیپروں کی چیکنگ کے دوران ممتحن اورایجوکیشن بورڈ کی انتظامیہ کی کوتاہی پائی گئی اورامیدواروں کی شکایات درست ثابت ہونے پر ایجوکیشن بورڈ کو امیدواروں کے پرچوں کے نمبرز بڑھانے پڑے۔جبکہ اس حوالے سے ایجوکیشن بورڈ کے کنٹرولر امتحانات انور فاروق کا کہنا ہے کہ نویں جماعت کے پرچوں میں دوسو سے زائد طلبا وطالبات کی ری چیکنگ روزانہ کی بنیاد پر کی جاتی رہی ہے۔جس میں دس سے پندرہ امیدواروں کی شکایات درست ثابت ہونے پر ان کے پرچوں کے نمبر بڑھائے گئے ہیں۔ اس میں کوتاہی کے مرتکب ایگزامینرز اورسکریسی افسروں کے خلاف کاروائی کی جارہی ہے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...