پاکستان سے ہونیوالی سمگلنگ سے خطرات بڑھ رہے ہیں: آٹھ ممالک کا حکومت کو خط

پاکستان سے ہونیوالی سمگلنگ سے خطرات بڑھ رہے ہیں: آٹھ ممالک کا حکومت کو خط

لاہور(زاہد علی خان) 8مما لک نے حکومت پاکستان کوخطوط لکھے ہیں کہ ان کے ممالک میں انسانی سمگلنگ میں ملوث افراد کی بہتات ہوتی جارہی ہے۔ اوران ممالک نے انسانی سمگلروں کے ایجنٹ بھی موجود ہیں ۔جس کی وجہ سے ان ممالک کو کئی طرح کے خدشات لاحق ہوگئے ہیں۔ذرائع کے مطابق یونان، سپین،اٹلی ،ترکی سمیت ان ممالک کی جانب سے ان خدشات کا اظہار بھی کیا گیا ہے کہ یہاں آنے والے بیشتر لوگ جرائم پیشہ ہوتے ہیں۔اور انہیں جب پکڑا جاتا ہے تو وہ کہتے ہیں کہ انہیں پاکستان سے سمگل کیا گیا ہے۔یونان اورسپین میں گرفتار ہونے والوں نے بتا یا کہ پاکستان میں کئی ایسے گروہ ہیں جو بھاری معاوضہ لے کر لوگوں کو غیر قانونی طور پر بیرون ملک بھجواتے ہیں۔تحقیقات کے دوران یہ بات بھی سامنے آئی ہے کہ انسانی سمگلر کروڑوں میں کھیل رہے ہیں اورانہیں ایف آئی اے اوردیگر ایجنسیوں کی پشت پناہی حاصل ہے۔ذرائع نے یہ بھی بتایا ہے کہ گزشتہ ایک سال کے دوران یونان ،ترکی ،سپین اوراٹلی میں 2100افرادکو غیر قانونی طور پر داخل ہونے پر گرفتار کیا گیا ہے۔ایک خط میں یہ بھی انکشاف کیا گیا ہے کہ ان ممالک میں سمندری اورہوائی راستوں سے آنے کے علاوہ بھی انسانی سمگلر جنگلوں کے ذریعے پیدل بھجوا تے ہیں اور بعض اوقات جب یہ لوگ سرحد پر گرفتار ہوجاتے ہیں تو انہیں پاکستان کے علاوہ دیگر ممالک میں بیٹھے انسانی سمگلر چھڑانے میں مدد بھی کرتے ہیں۔بتا یا گیا ہے کہ حکومت نے اس حوالے سے سخت اقدامات کر لیے ہیں اورائرپورٹ پر موجود حکام کو الرٹ کردیا ہے۔کچھ عرصہ قبل وفاقی وزیر داخلہ نے بھی اس سلسلے میں ڈی جی ایف آئی اے اوردیگر ایجنسیوں کو خبر دار کیا ہے اگر کوئی اہلکار اس حوالے سے پکڑا گیا تو اس کے خلاف بھی مقدمہ درج کیا جائے گا۔

مزید : صفحہ آخر


loading...