چین میں اگر گاڑی کی کسی پیدل چلتے شخص سے ٹکر ہو جائے تو اکثر ڈرائیور کی کوشش ہوتی ہے راہگیر کو زخمی چھوڑنے کی بجائے مار ڈالے، ایسا کیوں؟ ناقابل یقین وجہ جانئے

چین میں اگر گاڑی کی کسی پیدل چلتے شخص سے ٹکر ہو جائے تو اکثر ڈرائیور کی کوشش ...
چین میں اگر گاڑی کی کسی پیدل چلتے شخص سے ٹکر ہو جائے تو اکثر ڈرائیور کی کوشش ہوتی ہے راہگیر کو زخمی چھوڑنے کی بجائے مار ڈالے، ایسا کیوں؟ ناقابل یقین وجہ جانئے

  


بیجنگ (نیوز ڈیسک) ٹریفک حادثات تو ہر ملک میں پیش آتے ہیں مگر چین میں کسی راہگیر کے ساتھ کوئی گاڑی ٹکرا جائے تو اس کے بعد جو ہوتا ہے اسے سن کر ہی رونگٹے کھڑے ہوجاتے ہیں۔ نیوز سائٹ nationalpost.com کے مطابق چین اور تائیوان میں یہ رواج عام پایا جاتا ہے کہ اگر کوئی ٹریفک حادثے میں زخمی ہوجائے تو اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ وہ زندہ نہ بچے اور اس کے لئے ڈرائیور کو زخمی کے اوپر سے بار بار بھی گاڑی گزارنی پڑے تو وہ ایسا ضرور کرتا ہے۔ نیوز سائٹ نے اس بھیانک حقیقت کا انکشاف کرتے ہوئے متعدد ایسی مثالیں پیش کی ہیں جو سی سی ٹی وی کیمروں اور جدید موبائل فون کے آنے کے بعد دنیا کے سامنے آچکی ہیں۔

اپریل میں فوشان شہر کی ایک فروٹ مارکیٹ میں ایک بی ایم ڈبلیو گاڑی نے ایک 2 سالہ بچی کو ٹکر ماردی۔ اس کے بعد گاڑی میں بیٹھی خاتون نے گاڑی واپس کی اور دوبارہ بچی کے اوپر سے گزاری۔ اگرچہ بچی کی دادی چیختی چلاتی رہی لیکن بے رحم خاتون نے جب تک بچی کی موت کی تسلی نہ کرلی گاڑی اس کے سر اور دھڑ سے بار بار گزارتی رہی۔ اسی طرح 2008ءمیں ایک ٹی وی رپورٹ میں دکھایا گیا کہ یاﺅشیاﺅ شینگ نامی ایک ڈرائیور نے ایک 64 سالہ خاتون کو ٹکر ماری، لیکن پھر واپس آکر اسے بار بار کچلا اور اس کی موت کی تسلی کرنے کے بعد گاڑی بھگالے گیا۔

2010ءمیں شینسی کے علاقے میں ریکارڈ کی گئی ویڈیو کے مطابق ایک بی ایم ڈبلیو گاڑی والے نے اسی طرح بے رحمی سے ایک 3 سالہ بچے کو ہلاک کیا۔ شاید اس نوعیت کا سب سے بے رحمانہ واقعہ سشوان صوبے میں پیش آیا جس کے درجنوں عینی شاہد بھی موجود ہیں۔اس واقعے میں ایک ٹرک کی ایک 2 سالہ بچے کے ساتھ معمولی سی ٹکر ہوئی جس سے بچہ گرا تو ضرور مگر سنبھل گیا۔ ننھا بچہ اٹھا اور اپنی گری ہوئی چھتری کو اٹھانے کیلئے بڑھا تو اسی وقت ٹرک والے نے واپس آکر اسے دوبارہ ٹکر ماردی اور اس کے اوپر سے منوں وزنی ٹرک گزارا، اور جیتے جاگتے معصوم بچے کو وحشیانہ طریقے سے کچل کر ہلاک کردیا۔

آپ حیران ہوں گے کہ چینی ڈرائیور ایسا کیوں کرتے ہیں۔ نیوز سائٹ کے مطابق اس کی وجہ یہ ہے کہ اگر کوئی زخمی ہوجائے تو حادثے کے ذمہ دار ڈرائیور کو اسے عمر بھر علاج اور دیگر متعلقہ ضروریات کے اخراجات ادا کرنا پڑتے ہیں، جو لاکھوں ڈالر تک پہنچ سکتے ہیں۔ دوسری جانب اگر حادثے میں کوئی ہلاک ہوجائے تو ذمہ دار کو محض ایک دفعہ کفن دفن وغیرہ کی ادائیگی کرنا پڑتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ اگر کسی ڈرائیور سے کوئی شخص زخمی ہوجائے تو وہ کوشش کرتا ہے کہ اسے مار ہی دے تاکہ ساری عمر اس کا بوجھ اٹھانے سے بچ سکے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...