تھانہ مارگلہ پولیس کا کارنامہ، سائیکل سوار محنت کش کو گاڑی تلے کچلنے والے پی ٹی آئی رہنماء کی بجائے اسکے ڈرائیور کے خلاف مقدمہ درج کرلیا

تھانہ مارگلہ پولیس کا کارنامہ، سائیکل سوار محنت کش کو گاڑی تلے کچلنے والے پی ...

  

اسلام آباد(آن لائن) تھانہ مارگلہ پولیس نے سائیکل سوار محنت کش کو گاڑی تلے کچلنے والے سیاسی شخصیت کی بجائے اس کے ڈرائیور کے خلاف مقدمہ درج کر دیا، مدعی کو راضی نامے کے لئے دباؤ ڈالا جانے لگا.

تفصیلات کے مطابق فیض محمد نے 29اگسٹ کو تھانہ مارگلہ میں درخواست دائر کرتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ وہ ضلع مانسہرہ کا رہائشی ہے میرا وال طالب خان F/7 F/8میں مالی کا کام کرتا تھا، 24اگسٹ کو گاڑی نمبرyz-013جو تیز رفتاری اور لاپرواہی سے آرہی تھی جس نے ٹریفک سگنل کو توڑتے ہوئے میرے والد جو کہ سائیکل پر سوار تھے ٹکر ماری جس سے میرے والد گاڑی کے آگے جاگرے گاڑی کے نامعلوم ڈرائیور نے بوکھلاہٹ کا شکار ہوکر میرے والد کے اوپر سے گاڑی گزار دی اور ساتھ ہی دو موٹرسائیکل سواروں کو بھی ٹکر مارتے ہوئے گاڑی بھگا دی اور میرے والد کو موقع پر ہی ترپتہ چھوڑ کر فرار ہو گیا.

مدعی نے آن لائن کو بتایا کہ سیف سٹی کیمروں کی مدد سے جب جائے و قوعہ کی فوٹیج حاصل کی گئی تو پتہ چلا کہ گاڑی چلانے والا شخس میاں عبدالقدیر احمد جالپ ہے جوکہ تحریک انصاف ضلع سرگودا سے پنجاب اسمبلی کے حلقہpp30سے ممبر صوبائی اسمبلی کا الیکشن بھی لڑ چکا ہے میاں عبدالقدیر جالپ نے میرے والد کو گاڑی تلے کچلا جس سے انکی موت واقع ہو گئی، میاں عبدالقدیر نے میرے والد کو کچلنے کے بعد آگے جاکر ڈراﺅینگ سیٹ پر اپنے ڈراﺅیر کو بیٹھا دیا اور خود دوسری سیٹ پر بیٹھ گیا فوٹیج میں یہ چیز واضح طور پر دیکھی جاسکتی اور اب میاں عبدالقدیر ہمیں دھمکیاں دے رہا اور راضی نامے کے لیے دبا¶ ڈال رہا ہے، جب کے پولیس نے بھی نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کیا ہے جبکے میاں عبدالقدیر نے اپنے ڈرائیور کی ضمانت قبل از گرفتاری کے لیے عدالت میں درخواست دائر کر دی ہے،جبکے ایف آئی آر میں نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج ہے، سیف سٹی کیمرے کی فوٹیج کے بعد پولیس کو میاں عبدالقدیر کے خلاف مقدمہ درج کرنا چاہیے لیکن مارگلہ پولیس میاں عبدالقدیر کو بچا رہی ہے اور اسکے خلاف مقدمہ درج کرنے سے ہچکچارہی ہے، پولیس کا کہا ہے کہ فوٹیج دیکھ کر ہی پتا چلے گا۔

مزید :

اسلام آباد -