نومبر کے فورا ًبعد شریف برادران کا ٹارگٹ آرمی ہوگی، چھلانگ لگانے کے لئے تیار بیٹھے ہیں: طاہر القادری

نومبر کے فورا ًبعد شریف برادران کا ٹارگٹ آرمی ہوگی، چھلانگ لگانے کے لئے تیار ...
نومبر کے فورا ًبعد شریف برادران کا ٹارگٹ آرمی ہوگی، چھلانگ لگانے کے لئے تیار بیٹھے ہیں: طاہر القادری

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ نومبر کے فورا ًبعد شریف برادران کا ٹارگٹ آرمی ہوگی، چھلانگ لگانے کے لئے تیار بیٹھے ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام "لائیو ود ڈاکٹر شاہد مسعود"میں آرمی چیف کے خطاب کے حوالے سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا ہے کہ نومبر کے فورا ًبعد شریف برادران کا ٹارگٹ آرمی ہوگی، چھلانگ لگانے کے لئے تیار بیٹھے ہیں،بیرونی خطرات تو بڑے واضح ہیں اور اندرونی خطرات کہہ کر انھوں نے 3طبقات کی طرف اشارہ کیاہے ۔ ایک وہ طبقہ جو سنگین جرائم کا ذمہ دار ہے ،دوسرا وہ جو کرپشن کا تاجدار ہے اور تیسرا وہ طبقہ جو دہشتگردی کو فروغ دینے والا ہے اور ان سب کو ایک مظبوط ترین سسٹم کے طور پر ملک میں مسلط کرنے والے حکمران ہیں۔ اندرونی اور بیرونی خطرات ابھی ختم نہیں ہوئے ۔ نیشنل ایکشن پلان صرف کراچی کے لئے نہیں تھا۔نیشنل ایکشن پلان پنجاب میں بھی ہونا چاہئے تھا۔

انھوں نے کہا کہ اگر خدا نخواستہ راحیل شریف کی مدت ختم ہونے سے پہلے شریف برادران کی حکومت نہ گئی تو مجھے افسوس سے کہنا پڑ رہا ہے کہ یہ نومبر ختم ہوتے ہی فوج پر حملہ کردیں گے اور ان کا پہلا ٹارگٹ پاکستان کی آرمی ہی ہوگی۔آپریشن ضرب عضب بھی انکی مرضی کے بغیر شروع کیا گیا تھا۔۔پاکستان آرمی ان کی آنکھ میںکانٹے کی طرح چبھتی ہے ،شریف برادران آرمی کو بھی پنجاب پولیس بنا دیں گے ۔ یہ صرف راحیل شریف کی ٹرم کے ختم ہونے کا انتظار کر رہے ہیں۔

کشمیر ہماری شہہ رگ ہے ،دوستی نبھانا اور دشمنی کا قرض اتارنا جانتے ہیں: آرمی چیف

طاہر القادری نے شریف برادران کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا کہ شریف برادران دہشتگردی کی آماجگاہیں ہیں اور یہاں سے ہی دہشتگردی کی فکر ، دہشتگردی کا نظریہ جنم لیتا ہے اور جب انکو دہشت گرد بن کر پناہ نہیں ملتی تو ان کو پنجاب کے اندر آکر مختلف جگہوں پر پناہ بھی دی جاتی ہے ۔پاک فوج کو ، دہشت گردی کے خلاف سوچنے والوں کو اور ضرب عضب کے ہیروز کو جنھوں نے تاریخی فتح حاصل کی ہے ان کو یہ سوچنا ہوگا کہ پنجاب میںرینجرز کے آپریشن میں جو بھی رکاوٹیں ہیں ان کا سبب کیا ہے ۔اگر وہ سبب کو جان لیں تو حل خود بخود سامنے آجائے گا ۔

انہوں نے کہا ہے کہ اگر آج رینجرز آپریشن پنجاب میں شروع ہوجائے اور بیک وقت 25سے30شہروں میںایک ہی رات ہو اور200سے 250دہشتگرد ایک ہی رات پکڑ لئے جائیں تو کھُرا شہباز شریف اور نواز شریف کے گھر تک جا پہنچے گا۔ اگر یہ کام ہو گیا تو شہبازشریف اور نواز شریف خود بولیں گے اور یہ کھُرا پھر انکے در دولت تک جا پہنچے گا ۔طاہر القادری نے کہا کہ جب پنجاب میں رینجرز آپریشن یہ پردہ اُٹھا دے گا تو اس میںسارے دہشتگردوں کے سہولت کاروںسے پردہ اٹھ جائے گا اور کھیل ختم ہو جائے گا۔جب تک شریف برادران پنجاب میں آپریشن نہیں ہونے دیں گیں ، دہشتگردوں کو بے نقاب ہونے نہیں دیں گے تو کیا فوج پوری عمر ضرب عضب لڑتی رہے گی؟۔

مزید :

قومی -