ٹی ایم اے خانپور میں درجہ چہارم کی اسامیوں میں گھپلوں کا انکشاف

ٹی ایم اے خانپور میں درجہ چہارم کی اسامیوں میں گھپلوں کا انکشاف

  

خان پور(تحصیل رپورٹر ) ٹی ایم اے خان پور میں درجہ چہارم کی 93خالی آسامیوں کیلئے سنیٹری ورکرز کی بھرتیوں کا اشتہار جاری ہوا جس کیلئے پنجاب حکومت کی جانب سے بھر تیوں کے سلسلہ میں ہدایات جاری کی گئیں لیکن ان پر عملدر آمد کرنے کی بجائے ٹی ایم اے افسران نے مبینہ طور پر بھرتیوں(بقیہ نمبر36صفحہ12پر )

کی 20ہزار روپے میں سیل لگا دی اور اس مد میں 2لاکھ روپے کے لگ بھگ رقم اکٹھی کرلی ۔منظور کا لونی کے رہائشی قاضی عبد القیوم نے انکشاف کیا ہے کہ بھر تی ہونیوالے93سینیٹری ورکرز میں سے 26وائٹ کالرز شامل کئے گئے ‘بوگس طریقوں سے یہ بھرتیاں کیں۔ 4جون کو امیدواروں کے انٹر ویو لئے گئے اور 27جولائی 2016کو آسامیوں کی تقرری کرکے تمام ملازمین کو میڈیکل سر ٹیفکیٹس بنواکر حاضری درج کرانے کا کہا گیا لیکن صرف چند ملازمین نے اپنے میڈیکل سر ٹیفکیٹ جمع کرائے گئے ہیں لیکن ٹی ایم اے افسران نے میڈیکل جمع کرائے بغیر اس دن سے تمام ملا زمین کی تنخواہیں منظور کرالیں جس دن انہوں نے انٹر ویو دیا تھا اور آج 07ستمبر کو تمام ملازمین کو تنخواہیں دی جائیں گی جس میں 23لاکھ روپے خورد برد کئے جائیں گے کیونکہ ٹی ایم اے افسران واہلکاروں نے چند ملازمین سے 2ماہ کی تنخواہ اور کئی سے24دن کی تنخواہیں ان سے وصول کرنے کی ’’ڈیل‘‘کرلی ہے جس میں سے آڈٹ آفیسر کو بھی ڈیڑھ لاکھ روپے کا حصہ دئے جانے کا امکان ہے ۔شہری قاضی عبد القیوم نے وزیر اعلیٰ پنجاب سمیت اعلیٰ حکام سے اپنی تحریری در خواستوں کے ذریعے سخت ترین نوٹس لینے کا مطالبہ کیا ۔

بھرتی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -