اب بجلی خلاء میں پیدا کی جائے گی،بغیر تاروں کے زمین تک بھی آئے گی،انقلابی منصوبے پر کام شروع

اب بجلی خلاء میں پیدا کی جائے گی،بغیر تاروں کے زمین تک بھی آئے گی،انقلابی ...
اب بجلی خلاء میں پیدا کی جائے گی،بغیر تاروں کے زمین تک بھی آئے گی،انقلابی منصوبے پر کام شروع

  

ٹوکیو(مانیٹرنگ ڈیسک)جاپان نے بجلی کے کھمبوں اور تاروں سے نجات حاصل کرنے کا نیا طریقہ تلاش کیا ہے۔ اب شمسی توانائی خلاءمیں ہی پیدا کی جا سکے گی اور اسے بغیر کسی تار کے زمین تک لایا جائے گا۔

مزید پڑھیں :پاکستان کا وہ برانڈ جس کی بیٹریاں دفاعی ادارے بھی استعمال کرتے ہیں کیونکہ ۔ ۔۔

انسانی تاریخ میں یہ ایک انقلابی طریقہ ہوگا۔ اس نظام کو کامیاب بنانے کے لیے ایک تاریخی تجربہ گزشتہ برس  مارچ میں جاچکا ہے جس میں سائنس دانوں نے 1.8 کلوواٹ بجلی مائیکرو ویوز کے ذریعے 55 میٹر دور بھیجی تھی۔

جرمن نشریاتی ادارے کے مطابق جاپان ایرو اسپیس ایکسپلوریشن ایجنسی (جاکسا) کے ترجمان کا کہنا ہے کہ ”ہم ٹیکنالوجی کے اس راستے پر ہیں، جس پر چلتے ہوئے شمسی توانائی تو خلاءخلامیں پیدا کی جائے گی لیکن اسے استعمال زمین پر کیا جائے گا“۔جاکسا کے مطابق زمین کے برعکس خلاء میں شمسی توانائی پیدا کرنے کے فوائد بھی زیادہ ہیں۔ اس نئے طریقے سے موسم اور وقت کے قید کے بغیر مستقل بنیادوں پر توانائی کے حصول کو ممکن بنایا جائے گا۔

جاپانی سائنس دانوں کے مطابق ایک بین الاقوامی خلائی اسٹیشن کی طرح خلاء میں بڑے شمسی پینلز چھوڑے جائیں گے، جو سورج کی توانائی کو جمع کرتے ہوئے اسے زمین کے ایک مخصوص حصے میں ٹرانسفر کریں گے۔

مزید پڑھیں :واٹس ایپ 4G ڈاﺅن لوڈ نہ کریں ورنہ۔۔۔

پینلز کے ساتھ اینٹینے ہوں گے اور یہ زمین سے 36 ہزار کلومیٹر کے فاصلے پر رہیں گے۔ ابتدائی اندازوں کے مطابق سن دو ہزار چالیس تک خلاء سے وائرلیس توانائی زمین تک پہنچائی جائے گی۔

مزید :

سائنس اور ٹیکنالوجی -