امریکی کمپنیاں پاکستان کو ایل این جی برآمد کرنے میں دلچسپی رکھتی ہیں : قونصلر ولیم چیپ

امریکی کمپنیاں پاکستان کو ایل این جی برآمد کرنے میں دلچسپی رکھتی ہیں : قونصلر ...

اسلام آباد ( آن لائن) امریکی سفارتخانہ کے کونسلر برائے اقتصادی امور ولیم چیپ لیتینن نے وفد کے ہمراہ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کا دورہ کیا اور تاجر برادری سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک پاکستان کے ساتھ توانائی شعبے میں تعاون کو فروغ دینے میں گہری دلچسپی رکھتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کی کئی کمپنیاں پاکستان کو ا یل این جی برآمدکرنے میں دلچسپی رکھتی ہیں جبکہ پاکستان اس شعبے میں امریکہ کے ساتھ قریبی تعاون فروغ دے کر اپنے توانائی بحران پر بہتر طور پر قابو پا سکتا ہے۔ ولیم چپ لیتینن نے کہا کہ امریکہ پاکستان کیلئے ایک بڑی ایکسپورٹ مارکیٹ ہے اور دونوں ممالک کے درمیان باہمی تجارت بہتر ہو رہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یونائیٹڈا سٹیٹس ایجنسی فار انٹرنیشنل ڈولپمنٹ پاکستان کی معیشت کو بہتر کرنے کیلئے اپنا کردار ادا رہی ہے جبکہ پاکستان نے امریکہ کی جی ایس پی سکیم سے کافی استفادہ حاصل کیا ہے کیونکہ پاکستان کی امریکہ کے ساتھ برآمدات کو فروغ مل رہا ہے۔ ولیم چیپ نے کہا کہ دونوں ممالک کے بہتر معاشی مفادات کے لئے امریکہ پاکستان کے ساتھ قریبی روابط قائم کرنے کا خواہش مند ہے اور ان مقاصد کے حصول کے لئے دونوں ممالک کے درمیان عوامی روابط کو مزید بہتر کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان تجارتی و اقتصادی تعلقات کو مزید بہتر کرنے کی کوششوں میں اسلام آباد میں قائم امریکی سفارتخانہ چیمبر کے ساتھ ہر ممکن تعاون کرنے کیلئے تیار ہے۔ اسلام آباد چیمبر صدر خالد اقبال ملک نے اپنے خطاب میں کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان تعلیم، توانائی، تجارت و سرمایہ کاری سمیت دیگر شعبوں میں بہتر تعلقات پائے جاتے ہیں تاہم دونوں کی باہمی تجارت ابھی تک ان کی اصل صلاحیت سے کم ہے۔

جس کو بہتر کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہا کہ دو طرفہ تجارت کو بہتر کرنے کیلئے دونوں ممالک نجی شعبوں کے ساتھ تعاون کریں۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ کی جی ایس پی سکیم پاکستان کیلئے 2017تک ہے جس کی مدت میں مزید توسیع کی تا کہ نجی شعبہ اس سے بہتر فائدہ اٹھا سکے۔ انہوں نے کہا کہ امریکہ پاکستان کی زیادہ سے زیادہ مصنوعات کو اپنی مارکیٹ میں آسان رسائی فراہم کرے تا کہ پاکستان کی برآمدات کو بہتر فروغ ملے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک زرعی ملک ہے اور امریکہ پاکستان کو اپنی زراعت کو جدید خطوط پر ترقی دینے کیلئے تعاون کرے۔ انہوں نے کہا کہ سی پیک کی وجہ سے پاکستان میں کاروبار کے نئے مواقع پیدا ہو رہے ہیں لہذا امریکہ کے سرمایہ کار سی پیک میں باہمی معاہدے اور سرمایہ کاری کے مواقع تلاش کریں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں فارماسوٹیکل انڈسٹری کی ترقی کے پرکشش امکانات پائے جاتے ہیں لہذا امریکہ پاکستان میں اس شعبے کی جدید ریسرچ لیبارٹریاں قائم کرنے میں تعاون کرے۔ اسلام آباد چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے سینئر نائب صدر خالد ملک نے کہا کہ پاکستان اور امریکہ کے درمیان متعدد شعبوں میں باہمی تعاون کے مواقع موجود ہیں لہذا باہمی تعاون کو بہتر کرنے اور دو طرفہ تجارت کو مزید ترقی دینے کی کوششوں میں دونوں مماک نجی شعبوں کی مدد کریں۔شمیم محمود#/s#

مزید : کامرس